13 ویں ترمیم سے حکومت آزاد کشمیر کو مالی اختیارات دینے کے حق میں ہوں ، اسمیں کچھی ایسی باتیں بھی ہیں جن سے ایک نیا پنڈورہ بکس کھل گیا ہے،تمام سیاسی جماعتیں ملکر سقم کو دورکر سکتی ہیں،سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود

منگل جون 20:40

مظفرآباد۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) آزاد کشمیر کے سابق وزیر اعظم و پی ٹی آئی کشمیر کے صدر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ 13 ویں ترمیم سے حکومت آزاد کشمیر کو مالی اختیارات دینے کے حق میں ہوں تاہم اسمیں کچھی ایسی باتیں بھی ہیں جس سے ایک نیا پنڈورہ بکس کھل گیا ہے۔تمام سیاسی جماعتیں ملکر اس میں موجود سقم کو دورکر سکتی ہیں۔

آزاد کشمیر کے بے شمار مسائل ہیں۔ بالخصوص وفاقی حکومت توجہ دے توٹورازم میں بہتری لائی جا سکتی ہے۔ آزاد کشمیر قدرتی حسن سے مالا مال ہے تاہم کشمیر کونسل کی کرپشن کی وجہ سے بے شمار مسائل ہیں جو حل طلب ہیں۔آزاد کشمیر کی خوبصورتی سوئٹزر لینڈ سے کم نہیں لیکن ناکافی سہولیات کے باعث اس جانب بہتری کے لئے توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار انھوں نے یہاں اسلام آباد میں وزیر امور کشمیر روشن خورشید بروچہ سے ایک گھنٹے کی تفصیلی ملاقات میں کیا۔

اس موقع پر وزیر امور کشمیر روشن خورشیدبروچہ نے بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کو آزاد کشمیر میں غربت کے خاتمے کے پروگرام کے بارے میں بھی آگاہی دی۔اس موقع پر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ 2005 ء کے زلزلے میں جو تباہی ہوئی تھی زلزلہ متاثرین ابھی تک دربدر ہیں اور جو فنڈز انکی بحالی کے لئے آئے تھے وہ بھی صحیح طرح خرچ نہیں ہو سکے۔

بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے مزید کہا کہ وادیء نیلم میں سیاحت کے فروغ کے لئے ایک ٹریننگ پروگرام شروع کیا جائے تاکہ عوام میں سیاحت کے متعلق آگاہی آسکے۔انھوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر میں بڑے پیمانے پر انسانی ھقوق کی پامالی ہو رہی ہے میں نے اس پر اپنے محدود وسائل سے دنیا بھر میں جا کر آواز اٹھائی ہے۔۔اقوام متحدہ کی کونسل برائے انسانی حقوق کی رپورٹ آنے میں میری کوششیں شامل ہیں۔ اس سلسلے میں میں اب دوبارہ یورپ کے ایک ہفتے کے دورے پر جا رہا ہوں اور کشمیریوں کی آواز دنیا تک پہنچائوں گا۔