جہلم، مسلم لیگ ن قائدین کی طرف سے این اے 66اور پی پی 25کے ٹکٹ تبدیل کرنے پر چیئرمین یونین کونسل چیئرمین بلدیہ و کونسلرز سراپا احتجاج

منگل جون 21:35

جہلم(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) مسلم لیگ ن قائدین کی طرف سے حلقہ این اے 66اور پی پی 25کے ٹکٹ تبدیل کرنے پر چیئرمین یونین کونسل چیئرمین بلدیہ و کونسلرز سراپا احتجاج،،تفصیلات کے مطابق سابق رکن پنجاب اسمبلی مسلم لیگ ن کے پی پی 26کے امیدوار چوہدری لال حسین نے کہا کہ مسلم لیگ ن ورکرز گروپ ہر وقت مسلم لیگ ن کو کمزور کرنے کیلئے نقصان پہنچانے کے ذمہ دار ہوتے ہیں جبکہ سابق ایم پی اے مہر محمد فیاض پی پی کا انتخاب نہیں جیت سکتے تو وہ قومی اسمبلی کا انتخاب کس طرح جیتے گے کیونکہ ان کی سیاست آلو پیاز کی سیاست ہے ،اگر قائدین نے ہمارے حق میں فیصلہ دیا تو انشاء اللہ ہم ضلع سے حسب روایت کلین سویپ کریںگے جبکہ اگر ٹکٹ تبدیل ہوئے تو ہم اپنے یونین کونسلز کے چیئرمین ،کونسلرز،بلدیہ اور وائس چیئرمین کے ہمراہ اپنا لائحہ عمل اختیار کریںگے ۔

(جاری ہے)

ان خیالات کااظہار آج انہوں نے گجر ہائوس میں منعقدہ ایک پرہجوم پریس کانفرنس میں کیا اس موقع پر وائس چیئرمین ضلع کونسل ڈاکٹر چوہدری محمد بشیر،چیئرمین بلدیہ جہلم حاجی مرزا راشد ندیم جرال،کونسلرز حاجی ملک انعام الحق،بائو کرم الہٰی ،مرکزی انجمن تاجران کے سرپرست شیخ محمد جاوید ،وائس پریذیڈنٹ کنٹونمنٹ بورڈ عمران بشیر وائیں،،مسلم لیگ ن سٹی جنرل سیکرٹری شیخ شکیل احمد کے علاوہ چیئرمین یونین کونسلز چوہدری عتیق الرحمن،میجر (ر)محمد آصف،راجہ کامران حیات،راجہ احسن رضا،راجہ مبارک کیانی،چوہدری عبدالطیف ایڈووکیٹ،چوہدری اللہ نواز،چوہدری محمد یعقوب،چوہدری محمد ارشد ایڈووکیٹ کے علاوہ دیگر چیئرمین ،کونسلرز موجود تھے۔

چیئرمین یونین کونسل نے کہا کہ ہم مہر محمدفیاض کو نہ ووٹ دیں گے اور نہ ہی سپوٹ کریںگے کیونکہ قائدین غلط فیصلے کر کے ضلع جہلم سے کلین سویپ کا خواب توڑ رہے ہیں انہوں نے کہا کہ حیران کن بات ہے کہ پہلے قائدین نے سالار لشکر چوہدری ندیم خادم کو حلقہ این اے 66اور چوہدری لال حسین کو پی پی 26سے گرین سگنل دے کر انتخابی مہم شروع کرنے کا عندیہ دیا لیکن مسلم لیگ ن ورکرز گروپ کے احتجاج کے بعد ایک دم صورتحال تبدیل کیوں ہوئی کیونکہ یہ لوگ اپنی آدھی انتخابی مہم مکمل کر چکے تھے انہوںنے کہاکہ آج چند لوگوں کے لیے فیصلے تبدیل کرنا حیران کن بات ہے جبکہ 1979سے ہمارے بڑے میاں نوازشریف کے ساتھ تھے اور آج بھی اپنے قائدین کے ساتھ ہیں چیئرمین یونین کونسلز نے کہا کہ ہر انتخابات میں کسی بھی جماعت کو مضبوط بنانے کیلئے اور کامیابی حاصل کرنے کیلئے چیئرمین یونین کونسلز ،چیئرمین بلدیہ اور کونسلرز اپنا کردار ادا کرتے ہیں جبکہ قائدین ان کو اعتماد میں لے کر ان حلقوںکے ارکان صوبائی و قومی اسمبلی کو ٹکٹ جاری کرتے ہیں،اگر مسلم لیگ ن کے قائدین نے چوہدری ندیم خادم کے خلاف فیصلہ دیا تو ہم اپنا لائحہ عمل اختیار کریںگے جس کے نتائج قائدین کو مل جائیںگے۔

چیئرمین یونین کونسل سنگھوئی راجہ احسن رضا نے کہا کہ اگرچوہدری ندیم خادم کو حلقہ این اے 66سے ٹکٹ نہیں دینا تو یہ دونوں حلقے ضمنی انتخاب کی طرح آزاد کر دیئے جائیں قائدین کو چوہدری ندیم خادم اور چوہدری لال حسین کی عوام میں مقبولیت کا اندازہ ہو جائیگا۔چیئرمین یونین کونسلز نے کہا کہ قائدین کو اپنی سیاسی بصیرت کا اپنے کیے گئے فیصلوں کو تبدیل نہیں کرنا چاہیے کیونکہ اس سے ان کی سیاسی اہلیت کو نقصان ہوتا ہے۔

جبکہ چیئرمین میونسپل کمیٹی جہلم حاجی مرزا راشدندیم جرال نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے قائدین نے جو ٹکٹ دے دیئے ہیں ان میں ابھی کوئی تبدیلی نہیں آئی اور نہ ہی آئیگی کیونکہ مسلم لیگ ن کے قائد میاں شہباز شریف کے سیاسی شعور کا کوئی بھی مقابلہ نہیں کر سکتا کیونکہ وہ ووٹ کے ساتھ ساتھ کارکنوں کو عزت دیتے ہیں اور اس کا پاس کرتے ہیں۔