عوام کو سستی وبلاتعطل بجلی کی فراہمی ہماری ترجیحات ہیں،حاجی فضل الہٰی

ضلع چترال میں100کلومیٹربجلی کی ٹرانسمیشن لائن کی تعمیر کا منصوبہ جاری ہے،واپڈاکے گولن گول بجلی گھر سے بجلی کی خریداری کے لئے بات چیت جاری ہے ،نگران صوبائی وزیر توانائی وبرقیات کی چترال کے وفد سے بات چیت

منگل جون 21:54

پشاور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) نگران صوبائی وزیر توانائی وبرقیات،پبلک ہیلتھ انجینئرڈیپارٹمنٹ،خیبرپختونخواحاجی فضل الہٰی نے کہاہے کہ عوام کو سستی اوربلاتعطل بجلی کی فراہمی ہماری ترجیحات ہیںکیونکہ توانائی کے بغیرملکی ترقی کا پہیہ نہیں چل سکتا۔ملک کودرپیش موجودہ توانائی بحران نے نہ صرف ہماری انڈسٹریزکو شدید دھچکاپہنچایا ہے بلکہ ہماری معاشی ترقی بھی رک گئی ہے۔

خیبر پختونخواکا ضلع چترال آبی وسائل سے مالامال ہے اوریہاں پرپائے جانے والے پن بجلی کے پیداواری وسائل اس علاقے کا قیمتی سرمایہ ہیں۔چترال میں100کلومیٹرطویل بجلی کی ٹرانسمیشن لائن تعمیر کی جارہی ہے،2015ء کو چترال میں آنے والے تباہ کن سیلاب سے مکمل طورپر تباہ ہونے والے ریشون بجلی گھر کی دوبارہ تعمیر وبحال پرجلد کام کا آغاز ہوجائے گا جبکہ صوبائی حکومت کی واپڈاکے ساتھ گولن گول بجلی گھر سے بجلی کی خریداری کے لئے بات چیت جاری ہے ۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار انہوں نے چترال چیمبرآف کامرس کے بانی صدرسرتاج خان کی قیادت میںچترالی وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ وفد میں ناظم ضلع چترال شمشیرخان اورایون بجلی گھر کے چیف ایگزیکٹومحمد رفیع بھی شامل تھے ۔ اجلاس میں سیکرٹری توانائی وبرقیات انجینئرسید ظفرعلی شاہ اورچیف ایگزیکٹوپیڈوانجینئرسید ذین اللہ شاہ کو چترال کے نمائندہ وفد نے چترال میں بجلی کے مسائل بیان کئے۔

چترالی وفد کو بتایا گیا کہ خیبرپختونخواحکومت فرنٹیرورکس آرگنائزیشن کے تعاون سے 280میگاواٹ کے دومنصوبوں ششگئی اورشوگوسن پر کام کررہی ہے جبکہ چترال میں 55منی مائیکرو ہائیڈل سٹیشن میں سی44مکمل ہوچکے ہیں جوجلدہی کمیونٹیزکے حوالے کردیئے جائیں گے۔ اسی طرح چترال میں 3فیڈرزپر مشتمل100کلومیٹرلمبی ٹرانسمیشن لائن کا منصوبہ بھی زیر تعمیر ہے۔

وفد کو بتایا گیا کہ چترال میں تعمیر ہونے والے منی مائیکروہائیڈل سٹیشنز کو کمیونٹیز کے حوالے کرنے کے سلسلے میںMechnismتیارکیا جارہاہے ۔سیکرٹری توانائی نے وفد کو یقین دلایا کہ چترال میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے مسئلے پر قابوپانے کے لئے واپڈاکے حال ہی میں تعمیر ہونے والی32میگاواٹ گولن گول بجلی گھر سے بجلی کی خریداری کے لئے بات چیت جاری ہے۔

چیف ایگزیکٹوپیڈونے چترالی وفد کو آگاہ کیا کہ ریشون بجلی گھر کی بحالی کے لئے کنسلٹنٹ کی خدمات حاصل کرلی گئی ہیں جبکہ جلد ہی عملی کام کے سلسلے میں ٹھیکہ دار کی خدمات حاصل کرلی جائیں گی۔ اجلاس کے آخر میں صوبائی وزیر توانائی فضل الٰہی نے چترال کے وفد کو یقین دلایا کہ موجودہ نگران صوبائی حکومت چترال کودرپیش بجلی کے مسائل پر قابوپانے کے لئے عملی طورپر اقدامات اٹھائے گی۔

متعلقہ عنوان :