ملک میں کاروبار ی سہولیات کی بہتری کیلئے وًن ونڈو آپریشن شروع کریں گے‘شہبازشریف

ملک میں کاروبار کی ترقی کے لئے امن قائم کیا اور بجلی کا بحران حل کیا۔ ہم نے 10ہزار میگاواٹ بجلی کے منصوبے لگائے ہیں اگر موقع ملا تو کراچی میں پانی کا مسئلہ 3 سال میں حل کریں گے، کراچی میں بھی میٹرو منصوبے بننے چاہیے‘صدر مسلم لیگ (ن)

منگل جون 22:36

ملک میں کاروبار ی سہولیات کی بہتری کیلئے وًن ونڈو آپریشن شروع کریں ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) پاکستان مسلم لیگ( ن) کے صدر میاں شہباز شریف نے کراچی میں سینئر صحافیوں سے ملاقات کی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شفاف انتخابات سے ہی پاکستان کی ترقی ممکن ہے۔ قومی حکومت ہی مسائل کا حل کرسکتی ہے۔ اگرخدمت کا موقع ملا تو قومی حکومت بنائیں گے۔ ہماری حکومت نہ بنی تو جس بھی جماعت کی حکومت بنے گی اس سے تعاون کریں گے۔

قومی حکومت میری ذاتی رائے ہے یہ مسلم لیگ ن کا موقف نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کاروبار ی سہولیات کی بہتری کے لیے وًن ونڈو آپریشن شروع کریں گے۔ گرین پاسپورٹ کی عزت کے لئے کشکول توڑکر معیشت کو ترقی دینا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں کاروبار کی ترقی کے لئے امن قائم کیا اور بجلی کا بحران حل کیا۔

(جاری ہے)

ہم نے 10ہزار میگاواٹ بجلی کے منصوبے لگائے ہیں۔

تمام منصوبے ماضی کے مقابلے میں آدھی قیمت پر لگے۔ بجلی کے منصوبے اپنے وسائل سے لگائے ہیں اب بھی اپنے وسائل سے کام کرنا ہوگا۔ کالا باغ ڈیم پر اتفاق رائے نہیں ہے اس لئے اس پر مزید وقت ضائع نہیں کیا جا سکتا۔ بھاشا ڈیم پاکستان کے لئے ناگزیر ہے اورآئندہ جو بھی حکومت آئے بھاشا ڈیم اس کی اولین ترجیح ہونی چاہیے کیونکہ اس کا کوئی نعم البدل نہیں۔

بھاشا ڈیم کے لیے وسائل خود لائیں گے۔ بھاشا ڈیم کی فزیبلٹی رپورٹ تیار ہے۔ بھارت پر انحصار کیا تو تباہ ہو جائیں گے۔ بھارت کے مقابلے میں ہمارے پاس پانی کم ہے۔ہمیں ہندوستان سے معاشی جنگ کرنی ہے جس کے لیے تیاری کرنا پڑے گی۔انہوں نے کہا کہ اگر موقع ملا تو کراچی میں پانی کا مسئلہ 3 سال میں حل کریں گے۔ کراچی میں بھی میٹرو منصوبے بننے چاہیے۔

گرین لائن منصوبے میں مٹھائی کے چکر نے بسیں لیٹ کردیں۔اگر ہمیں موقع ملا تو گرین لائن بسیں بغیر مٹھائی کے لائیں گے اور تین نئی لائنز بھی بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ 6ماہ میں کراچی کا گند صاف کر دیں گے۔ اللہ نے موقع دیا تو اگلے پانچ سال میں کراچی کو اس کا کھویا مقام دلائیں گے۔ کے الیکٹرک کے دو پلانٹ بند پڑے ہیں وہ کیوں نہیں چلا رہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ میں نجومی نہیں کہ بتاسکوں کہ کتنی سیٹیں جیتیں گے۔

دعا کریں الیکشن شفاف ہو جائیں۔ شہباز شریف نے کہا کہ میاں نواز شریف اور مریم نواز قانون کی حکمرانی کے لئے نیب کورٹ میں پیش ہوتے ہیں۔ قانون کی حکمرانی کے بغیر کوئی معاشرہ نہیں چل سکتا۔ نیب کی کاروائیوں غیر جانبدار ہونی چاہئے۔ میں آئی بی کاسربراہ نہیں کہ بتاسکوں کہ کون نیب کا ہیڈ کواٹر اڑانا چاہتا ہے۔انہوں نے کہا کہ این ایف سی ایوارڈ کو بدلنا ممکن نہیں۔

ٹیکس کی ریکوری کو بہتر کرنا اور ٹیکس چوری کو روکنا ہو گا۔ ٹیکس کے نظام میں اصلاحات ناگزیر ہیں۔۔کراچی کی ترقی کے لئے ہر حکومت کو خصوصی پیکج دینا ہو گا۔ شہباز شریف نے کہا کہ آزادی صحافت پر مکمل یقین رکھتا ہوں۔ آزادی صحافت کے بغیر کوئی معاشرہ زندہ نہیں رہ سکتا۔ خراب کام پر پکڑ اور اچھے کام کی پذیرائی ہونی چاہیے۔ میں نے اربوں روپے کی بچت کی اس کی پذیرائی ہونی چاہیے۔

شہباز شریف نے کہا کہ اگر ہمیں موقع ملا تب بھی قومی حکومت بنائیں گے۔ مجھے کوئی ابہام نہیں کہ انتخابات شفاف ہونگے اور انتقال اقتدار ہو گا۔جب پارٹی کا سربراہ بنا فورا کراچی پر توجہ دی پہلے کیسے دیتا۔ میری خواہش ہے کہ کراچی ترقی کرے۔۔ شہباز شریف نے کہا کہ برآمدات میں اضافے کے بغیر ترقی ممکن نہیں۔ میاں شہباز شریف نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت نے دہشتگردی کا خاتمہ کیا۔ قیام امن کے لیے ہمارے فوجی جوانوں نے بے مثال قربانیاں دیں۔ شمالی وزیرستان میں ہمارے 4 ہزار جوان اور افسران شہید ہوئے۔