پاکستان بھوٹان کو بہت اہمیت دیتا ہے،جسٹس (ر) ناصر الملک

دونوں ممالک کے درمیان تعلیم، سیاحت، ثقافتی تبادلوں اور ماحولیاتی تحفظ کے شعبوں میں تعلقات کو مزید وسعت دینے کی ضرورت ہے، بھوٹان سارک کے احیاء کیلئے اپنا کردار ادا کرے،نگران وزیراعظم کی بھوٹان کے وفد سے گفتگو

منگل جون 23:00

پاکستان بھوٹان کو بہت اہمیت دیتا ہے،جسٹس (ر) ناصر الملک
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) نگران وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک نے کہاہے کہ پاکستان بھوٹان کو بہت اہمیت دیتا ہے، دونوں ممالک کے درمیان تعلیم،، سیاحت، ثقافتی تبادلوں اور ماحولیاتی تحفظ کے شعبوں میں تعلقات کو مزید وسعت دینے کی ضرورت ہے، بھوٹان سارک کے احیاء کیلئے اپنا کردار ادا کرے۔ نگران وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک نے یہ بات منگل کو بھوٹان کے 10 رکنی وفد سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی ۔

وفد بھوٹان کے پاکستان کیلئے نان ریذیڈنٹ سفیر سونم توبدن ربگی کی قیادت میں بھوٹان کی سنٹرل مناسٹک باڈی کے ارکان پر مشتمل تھا۔ وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک نے وفد کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان بھوٹان کو بہت اہمیت دیتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مستقبل میں دونوں ممالک کے درمیان تعلقات مزید مستحکم ہوں گے۔

(جاری ہے)

وزیراعظم نے بھوٹان کے ساتھ تعلیم،، سیاحت، ثقافتی تبادلوں اور ماحولیاتی تحفظ کے شعبوں میں تعلقات کو مزید وسعت دینے کی ضرورت پر زور دیا۔

انہوں نے سارک کیلئے پاکستان کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے زور دیا کہ بھوٹان سارک کے احیاء کیلئے اپنا کردار ادا کرے۔ بھوٹان کے سفیر نے گرمجوشی سے خیرمقدم اور میزبانی پر نگران وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے دونوں ممالک کے درمیان تعاون کیلئے وسیع مواقع کے حوالہ سے نگران وزیراعظم کے خیالات سے اتفاق کیا۔ انہوں نے سارک کو ایک فعال علاقائی تنظیم بنانے کے حوالہ سے اپنے ملک کے عزم کا بھی اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان بدھ مت کے آرٹ اور کلچر کے حوالہ سے بھوٹان کیلئے گہری دلچسپی اور خصوصی مقام کا حامل ہے اور پاکستان کے علاقہ سوات کو اس لحاظ سے خصوصی اہمیت حاصل ہے کیونکہ اسے دوسرے بدھا گرو پدماسمبھاوا کی جنم بھومی تصور کیا جاتا ہے۔ بھوٹان کے وفد کے دورہ سے دونوں ممالک کے مابین پہلے سے موجود خوشگوار تعلقات مزید مستحکم ہوں گے۔