سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی الیکشن کے لیے نااہل

اپیلٹ ٹربیونل نے این اے 57 سے نااہل قرار دے دیا

Mian Nadeem میاں محمد ندیم بدھ جون 14:30

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی الیکشن کے لیے نااہل
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔27 جون۔2018ء) سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو اپیلٹ ٹربیونل نے این اے 57 سے نااہل قرار دے دیا ،جسٹس عباد الرحمن لودھی نے شاہد خاقان عباسی کے کاغذات نامزدگی مسترد کئے۔ایپلٹ ٹریبونل نے 25 جون کو این اے 57 پرسابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے کاغذات منظور کئے جانے کے خلاف درخواست پر ان کے وکیل کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

قبل ازیں شاہد خاقان عباسی نے کہاتھا کہ کاغذات نامزدگی میں کسی قسم کی کوئی ردو بدل نہیں کی گئی اور میرے وکیل نے عدالت کے سامنے اضافی معلومات بھی پیش کیں۔تفصیلات کے مطابق الیکشن اپیلٹ ٹربیونل میں این اے 57 مری سے مسلم لیگ (ن) کے رہنما شاہد خاقان عباسی کے کاغذات نامزدگی کی منظوری کے خلاف اپیل کی سماعت ہوئی۔

(جاری ہے)

الیکشن اپیلٹ ٹربیونل کے جج جسٹس عبادالرحمن لودھی نے اپیل منظور کرتے ہوئے سابق وزیراعظم کے کاغذات نامزدگی منظور کرنے کا ریٹرننگ افسر کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا۔

الیکشن ٹربیونل نے شاہد خاقان عباسی کو این اے 57 مری سے الیکشن لڑنے کےلیے نااہل قرار دے دیا۔ درخواست گزار مسعود احمد عباسی نے شاہد خاقان عباسی کے کاغذات میں ٹیمپرنگ کا الزام عائد کیا۔ درخواست گزاروں نے اعتراض اٹھایا کہ شاہد خاقان عباسی نے لارنس کالج کے جنگل پر قبضہ کر رکھا ہے، ایف سیون ٹو میں مکان کی ملکیت بھی کاغذات نامزدگی میں کم لکھی گئی ہے۔

واضح رہے کہ جسٹس عبادالرحمن لودھی نے ہفتے کو این اے 57 مری سے شاہد خاقان عباسی کے نامکمل اورٹمپرنگ شدہ کاغذات منظورکرنے پرریٹرننگ افسرکے اختیارات بھی واپس لیتے ہوئے کاغذات کی منظوری کو غیر قانونی قرار دیا تھا۔جسٹس عباد الرحمن لودھی نے شاہد خاقان عباسی کے کاغذات نامزدگی مسترد کئے۔ایپلٹ ٹریبونل نے 25 جون کو این اے 57 پرسابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے کاغذات منظور کئے جانے کے خلاف درخواست پر ان کے وکیل کے دلائل مکمل ہونے کے بعد فیصلہ محفوظ کیا تھا۔