انتخابی مہم، ضابطہ اخلاق پر عملدرآمد یقینی بنانے کے لیے ڈپٹی کمشنرز ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسر مقرر

بدھ جون 15:20

فیصل آباد۔27 جون(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) الیکشن کمیشن آف پاکستان نے عام انتخابات کے سلسلے میں انتخابی مہم کیلئے جاری ضابطہ اخلاق پر عملدرآمد کویقینی بنانے کیلئے ڈپٹی کمشنرز کو ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسرز مقرر کردیا ہے جبکہ مختلف محکموں کے افسران پر مشتمل مانیٹرنگ آفیسرز کا بھی تقرر کردیا گیا ہے جو عام انتخابات کے شفاف، غیر جانبدارانہ، آزادانہ، منصفانہ انعقاد کو یقینی بنانے کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں گے۔

الیکشن کمیشن فیصل آباد کے ترجمان نے بتایا کہ اس ضمن میں فیصل ۱ٓباد میں مختلف محکموں کے افسران پر مشتمل 42 مانیٹرنگ آفیسر مقرر کئے گئے ہیں جبکہ ڈپٹی کمشنر فیصل آباد ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفیسر ہوں گے۔ دریں اثناء اس سلسلہ میں مانیٹرنگ افسران کو ان کی ذمہ داریوں سے آگاہ کرنے کیلئے ایک اہم اجلاس ڈپٹی کمشنر فیصل آباد سید احمد فواد کی زیرصدارت ان کے آفس کے کمیٹی روم میں منعقد ہوا جس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرز اور مختلف محکموں سے تعلق رکھنے والے مانیٹرنگ افسران نے شرکت کی۔

(جاری ہے)

ڈپٹی کمشنر نے مانیٹرنگ افسران سے کہا کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان نے عام انتخابات کے پرامن،شفاف اور غیر جانبدارانہ انعقاد کے سلسلے میں انتخابی مہم کیلئے ضابطہ اخلاق جاری کرنے کے علاوہ دیگر انتظامی وقانونی اقدامات کئے ہیں جن پر عملدرآمد کیلئے متعلقہ افسران اپنی قومی ذمہ داریوں کو احسن طریقے سے انجام دیں۔ انہوں نے مانیٹرنگ افسران سے کہا کہ وہ اپنے مقررکردہ حلقوں کے علاقوں کا روزانہ دورہ کریں اور ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزیوں سے متعلق مجوزہ پرفارمہ پر فوری رپورٹ پیش کریں۔

انہوں نے ضابطہ اخلاق کی مختلف شقوں کی تفصیلات سے متعلق بتایا کہ امیدوار انتخابی مہم میں 18x23انچ سائز کے پوسٹر،9x6 انچ کے ہینڈ بلز،3x9 فٹ کے بینرز اور2x3 فٹ کے پورٹریٹ آویزاں کرسکتے ہیں جبکہ ہورڈنگز، بل بورڈز، وال چاکنگ اور پینا فلیکس پر پابندی عائد کی گئی ہے۔ انہوں نے واضح کیا کہ پوسٹرز پر پرنٹرز کانام ضرور شائع ہونا چاہئے بصورت دیگر خلاف ورزی کے زمرے میں آئیگا۔

انہوں نے بتایا کہ انتخابی مہم میں کارنرز میٹنگز کی اجازت ہوگی جبکہ اسلحہ وغیرہ لے کر چلنے اور اس کی نمائش کرنے کی ممانعت کی گئی ہے۔ ڈپٹی کمشنر نے کہا کہ پوسٹرز کے سائزاوردیگر ضوابط کی خلاف ورزیوں کی ثبوت کے طور پر موبائل کے ساتھ تصویر بنا کر رپورٹ کے ساتھ بھیجی جائے۔ انہوں نے کہا کہ اسسٹنٹ کمشنرز اوردیگر متعلقہ افسران انتخابی امیدواروں کو الیکشن کمیشن آف پاکستان کے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی کاپیاں فراہم کرکے اس پر عملدرآمد سے آگاہ کریں۔