نیپرا نے بجلی کی قیمت میں ایک روپے پچیس پیسے اضافے کی منظوری دے دی

صارفین پر پندرہ ارب ستر کروڑ روپے کا بوجھ پڑیگا ،ْ قیمتوں میں اضافے کی منظوری مئی کی فیول.ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کی گئی

بدھ جون 15:20

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) نیپرا نے بجلی کی قیمت میں ایک روپے پچیس پیسے اضافے کی منظوری دے دی ،ْصارفین پر پندرہ ارب ستر کروڑ روپے کا بوجھ پڑے گا ۔بدھ کو قیمتوں میں اضافے کی منظوری مئی کی فیول.ایڈجسٹمنٹ کی مد میں کی گئی ہے ،ْمئی میں ریفرنس فیول لاگت 5روپے 29 پیسے فی یونٹ رہی ،ْسی پی پی اے نے بجلی کے نرخوں میں 1روپے 32 پیسے اضافے کی درخواست دی تھی ،ْمئی میں مہنگے فرنس آئل سے 19.30فیصد بجلی پیدا کی گئی ،ْ فرنس آئل سے 12روپے 47 پیسے فی یونٹ بجلی پیدا کی گئی ،ْدرآمدی ایل این جی سے 23.85 فیصد بجلی پیدا کی گئی ،ْایل این جی سے پیدا ہونے والی بجلی کی فی یونٹ قیمت 9روپے 10 پیسے فی یونٹ رہی ،ْسینٹ کی توانائی کمیٹی کے چئیرمین سینٹر فدا محمد نے بھی سماعت میں شرکت کی ۔

(جاری ہے)

ممبر نیپرا حمایت اللہ سسٹم کے تکنیکی و انتظامی نقصانات صارفین کو ادا کرنے پڑتے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ تکنیکی و انتظامی نقصانات کی وجہ سے سرکولر ڈیِٹ بڑھ رہا ہے ،ْسستی گیس کم صلاحیت والے جنکوز کو دی جارہی ہے ،ْبہتر صلاحیت والے آئی پی پیز کو کم.گیس دی جارہی ہے۔انہوںنے کہاکہ اگر آئی پی پیز کوگیس دی جائے تو وہ زیادہ بجلی پیدا کرسکتے ہیں ۔انہوںنے کہاکہ قطر سے 13 روپے میں گیس لی جارہی ہے ،ْبلوچستان کو6روپے دینے کو تیار نہیں ۔حمایت اللہ نے کہا کہ اگر سستی گیس آئی پی پیز کو دی جاتی تو بجلی کی قیمت میں فی یونٹ صرف 30 یا 35 پیسے اضافہ کرنا پڑتا

متعلقہ عنوان :