الیکشن کمیشن کا انتخابات تک چولستان میں سرکاری اراضی کی الاٹمنٹ روکنے کا حکم

چولستان کا 60 لاکھ ایکڑ رقبہ ہی 2ہزار لوگوں کی اسکروٹنی 2015 تک مکمل کی گئی ،من پسند شخصیت کو ایم ڈی چولستان ڈیولپمنٹ اتھارٹی مقرر کیا گیا، در خواست گزار

بدھ جون 15:20

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) الیکشن کمیشن نے انتخابات تک چولستان میں سرکاری اراضی کی الاٹمنٹ روکنے کا حکم دے دیا۔بدھ کو الیکشن کمیشن میں چولستان میں سرکاری اراضی من پسند افراد کو الاٹ کرنے کے خلاف درخواست کی سماعت ممبر سندھ عبدالغفار سومرو کی سربراہی میں تین رکنی کمیشن نے کی ،وکیل درخواست گزار نے کمیشن کو بتایا کہ چولستان کا 60 لاکھ ایکڑ رقبہ ہی2ہزار لوگوں کی اسکروٹنی 2015 تک مکمل کی گئی ،من پسند شخصیت کو ایم ڈی چولستان ڈیولپمنٹ اتھارٹی مقرر کیا گیا۔

(جاری ہے)

جعلی نمبر داریاں لگا کر دو لاکھ ایکڑ سرکاری اراضی الاٹ کی گئی.

حکومت نے 1500 لوگوں کو اراضی الاٹ کی ہی. وکیل چولستان ڈیولپمنٹ اتھارٹی نے کمیشن کو بتایا کہ سرکار نے 22 ہزار درخواستوں میں سے 15 ہزار کو اسکروٹنی کے بعد فائینل کیا. اب تک 3759 کی بیلٹنگ ہوئی ہے،حکومت نے اب تک کوئی الاٹمنٹ نہیں کی. ایم ڈی چولستان ڈیولپمنٹ اتھارٹی نے کمیشن کو بتایا کہ میرا تقرر 8 ماہ پہلے ہوا ہی. الیکشن کمیشن نے استفسار کیا کہ معاملہ 2013 سے چل رہا ہے ایم ڈی کا تقرر الیکشن کے قریب کیوں ہوا. الیکشن کمیشن نے انتخابات تک چولستان میں سرکاری اراضی کی الاٹمنٹ روکنے کا حکم دے دیا، کمیشن نے درخواستگزار کو ہدایت کی کہ ان کے پاس الاٹمنٹ کے ثبوت ہیں تو متعلقہ فورم پر جائی