پا ک فوج کا الیکشن کے شفاف انعقاد میں مکمل تعاون کا اظہار

الیکشن 2018،اہم ذمہ داری کیساتھ سیکیورٹی معاملات پر بھی فوکس رکھا جائے، آرمی چیف

بدھ جون 17:15

پا ک فوج کا الیکشن کے شفاف انعقاد میں مکمل تعاون کا اظہار
راولپنڈی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے ہدایت کی ہے کہ قومی انتخابات 2018 کی اہم ذمہ داری نبھانے کے ساتھ ساتھ سیکیورٹی معاملات پر بھی فوکس رکھا جائے۔ بد ھ کو پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ ((آئی ایس پی آر))کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیر صدارت جنرل ہیڈ کوارٹرز ((جی ایچ کیو))راولپنڈی میں کور کمانڈرز کانفرنس ہوئی۔

آئی ایس پی آر کے مطابق کانفرنس کے دوران خطے کی مجموعی سیکیورٹی صورتحال اور آپریشن ردالفساد کے تحت کارروائیوں کا جائزہ لینے کے ساتھ ساتھ خطے میں قیام امن کی کوششیں جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کیا گیا۔۔آئی ایس پی آر کے مطابق اجلاس میں عام انتخابات 2018 سے متعلق بھی بات چیت ہوئی اور اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ صاف و شفاف انتخابات کے لیے الیکشن کمیشن کی ضروری معاونت کی جائے گی۔

(جاری ہے)

اس موقع پر آرمی چیف نے ہدایت کی کہ اندرونی سیکیورٹی اور ملکی دفاع سے توجہ ہٹائے بغیر الیکشن کے انعقاد میں مکمل معاونت کی جائے۔واضح رہے کہ عام انتخابات 2018 آئندہ ماہ 25 جولائی کو ہونے جارہے ہیں۔اس حوالے سے تیاریاں حتمی مراحل میں داخل ہوچکی ہیں، گزشتہ دنوں انتخابات میں سیکیورٹی کے حوالے سے الیکشن کمیشن نے وزارت دفاع کو خط لکھ کر پاک فوج کے ساڑھے تین لاکھ اہلکاروں کی خدمات طلب کی تھیں، جس کی وزارت دفاع نے حامی بھرلی ہے۔

ذرائع کے مطابق وزارت دفاع نے تینوں مسلح افواج کے ریٹائرڈ فوجیوں کو الیکشن ڈیوٹیوں کے لیے طلب کرلیا ہے جبکہ ریٹائرڈ جوانوں کے پاس بھی مکمل اختیارات ہوں گے۔واضح رہے کہ عام انتخابات کے لیے بیلٹ پیپرز کی چھپائی اور ترسیل بھی فوج کی نگرانی میں کی جائے گی اور پاک فوج کے اہلکار 27 جون کو پرنٹنگ پریس کی سیکیورٹی سنبھال لیں گے۔