سعودی شوریٰ کونسل سرپرستی نظام کے خاتمے کیلئے کام کررہی ہے،شہزادی ریما

میرا کردار ایسے ایشوز کو اجاگر کرنا ہے جن کی مدد سے ہم تمام خواتین مثبت انداز میں آگے بڑھ سکیں،انٹرویو

بدھ جون 17:51

ریاض(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) سعودی عرب کی شہزادی ریما بنت بندر آل سعود نے کہا ہے کہ شوریٰ کونسل مرد وں کی سرپرستی کے خاتمے کے لیے کام کررہی ہے،خواتین کو کار چلانے کی اجازت دینا درست سمت میں ایک اہم قدم ہے۔بدھ کو ایک ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے سعودی شہزادی ریما بنت بندر آل سعود نے کہا کہ سرپرستی کا نظام ایک اہم ایشو ہے اور شوریٰ کونسل مسلسل اس پر کام کررہی ہے،حکومت میں ایک عورت کی حیثیت سے میرا کردار ایسے ایشوز کو اجاگر کرنا ہے،جن کی مدد سے ہم تمام خواتین مثبت انداز میں آگے بڑھ سکیں نہ کہ صرف اشرافیہ کی خواتین کو آگے بڑھنے کے مواقع ملیں۔

انہوں نے کہا کہ سرپرستی (گارڈین شپ) کے قوانین خواتین کو ڈرائیونگ یا کسی ملازمت کے حصول سے نہیں روکتے ہیں،تاہم ان قوانین کے تحت خواتین کے گھر سے باہر سفر پر کچھ قدغنیں عائد ہیں اور وہ مقررہ حد عمر سے قبل شادی نہیں کرسکتی ہیں۔

(جاری ہے)

انھوں نے کہا کہ سعودی عرب میں ایک اقتصادی حکمت عملی کے تحت تبدیلیاں رونما ہورہی ہیں تاکہ افرادی قوت میں بالخصوص خواتین کی تعداد بڑھائی جاسکے۔واضح رہے کہ شہزادی ریما سعودی اسپورٹس اتھارٹی کی نائب صدر ہیں،تاہم انہوں نے انٹرویو میں یہ واضح نہیں کیا کہ کب مملکت میں نافذ العمل سرپرستی کے قوانین میں تبدیلی لائی جائیگی۔