گوجرخان:محض 40گھنٹے کے دوران ریلوے ٹریک پر دوسرے حادثہ میں ایک اورانسان لقمہ اجل بن گیا

بدھ جون 18:31

گوجرخان(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) محض 40گھنٹے کے دوران ریلوے ٹریک پر دوسرے حادثہ میں ایک اورانسان لقمہ اجل بن گیا،بدھ کی صبح گورنمنٹ سرور شہیدکالج کے قریب ریلوے ٹریک کے ساتھ ساتھ واٹر کولر اٹھائے پیدل چلنے والاا سکیم2کارہائشی پٹھان قبیلہ کا لگ بھگ 80/85سالہ زر سعید ولدسعید مان راولپنڈی سے فیصل آباد جانیوالی ریل گاڑی پاکستان ایکسپریس کی دھمک یاپائیدان کی زد میں آجانے کے نتیجہ میں پٹڑی کے قریب پڑے پتھر پرگر کر جاںبحق ہوگیا ،غالب گمان ہے کہ ضعیف العمر زر سعید برق رفتار گذرتی ریل گاڑی کی دھمک کے نتیجہ میں ریلوے ٹریک کی بجری اورپتھروں پر جاگرا اوراسکاسربُری طرح پھٹ جانے سے اسکی موت واقع ہوگئی، گوجرخان میڈیا سنٹر GMCکے مطابق ریسکیو 1122اور ریلوے پولیس آناً فاناًوقوعہ پر پہنچ گئی تاہم ریلوے پولیس کی حدودسے باہر ہونیوالے حادثہ کی بناء پرگوجرخان تھانہ کو اطلاع دیدی گئی مگر علی الصبح پیش آنیوالے اس وقوعہ بارے تھانہ گوجرخان کو اطلاع کے لگ بھگ ڈیڑھ گھنٹہ تک پولیس موقع پرنہ پہنچی جس پر گوجرخان پریس کلب کی جانب سے DSPسردار بابر ممتازکودی گئی اطلاع کے فوری بعد پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر نعش اپنی تحویل میںلینے کے بعد ظاہری پوسٹمارٹم کیلئے 1122کی مددسے تحصیل ہیڈ کوارٹرزہسپتال منتقل کر دی ،متوفی کے بیٹے کے مطابق اسکے والد کاذہنی توازن درست نہ تھا اور اسکوہمیشہ کڑی نگرانی میں رکھا جاتا تھامگر بدقسمتی سے وہ آج موقع پاکر گھر سے نکل پڑا اسکی تلاش کیلئے نکلے ہی تھے کہ حادثہ کا شکار ہوگیا،یادرہے کہ سوموار کے روزنگائل پہلوان کے علاقہ میں بغیر پھاٹک ریلوے کراسنگ پر ذوالفقار نامی ویلڈر جعفر ایکسپریس کی زد میں آکر موت کے گھاٹ اترگیاتھا ،عوامی حلقوں نے شدت کے ساتھ مطالبہ کیا ہے کہ آئے روز حادثات کا سبب بننے والے بغیر پھاٹک کراسنگ ضروری تنصیبات کے ذریعہ محفو ظ بنائے جائیں