چنیوٹ، واپڈا ملازمین کی طرف سے میٹر اتارنے پر وکلاء اور ملازمین کے درمیان جھگڑا ،ایک دوسروں پر تھپڑوں کی بارش کر دی ، تین اہلکار زخمی

بدھ جون 21:21

چنیوٹ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) واپڈا ملازمین کی طرف سے میٹر اتارنے پر وکلا اور ملازمین کے درمیان جھگڑا ،ایک دوسروں پر تھپڑوں کی بارش کر دی تفصیلات کے مطابق لاہورروڈ واپڈا آفس میں وکلا اور واپڈا ملازمین کے درمیان ہاتھا پائی شروع ہو گئی جس کے باعث تین اہلکار زخمی ہو گئے۔واپڈاچنیوٹ کو بجلی چوری کا میٹر اتارنا مہنگا پڑ گیا۔

کنڈے لگا کر بجلی چوری کرتے ہوئے پکڑے جانے کی وجہ سے وکیل کا بجلی کا میٹر اتارنے کا معاملہ شدت اختیار کر گیا،،واپڈا آفس چنیوٹ میدان جنگ بن گیا،دونوں پارٹیوں کی جانب سے لاتوں،گھونسوں،مکوں اور گالم گلوچ کا آزادانہ استعمال وکلاء اور واپڈا ملازمین افسران کا ایک دوسرے پر مبینہ تشدد ہاتھا پائی کی وجہ سے متعدد وکلاء اور واپڈا ملازمین زخمی ہو گئے۔

(جاری ہے)

معلوم ہوا ہے کہ کہ واپڈا ملازمین نے گزشتہ روز وکیل عمردرازآسی کا بجلی کا میٹر بجلی چوری کئے جانے کی وجہ سے اتار لیاتھا جس پر وکیل عمردراز آسی دیگر وکلاء کے ہمراہ واپڈاآفس گئے تو وہاں تلخ کلامی ہو گئی جو شدت اختیار کر گئی واپڈاملازمین افسران اور وکلاء کے درمیان پیدا ہونے والے تنازعہ پر چنیوٹ پولیس کی نا اہلی کھل کر سامنے آگئی پولیس تاخیر سے پہنچنے کے بعد لڑائی ختم کروانے میں ناکام ہو گئی۔

ڈی ایس پی سٹی چنیوٹ اظہر یعقوب واقعہ کی کوریج کرنے والے میڈیا نمائندوں اور کیمرہ مینوں کو دھکے، بد تمیزی کرنے کے ساتھ ساتھ انہیں کوریج سے روکتے رہے۔۔پولیس بیچ بچاؤ کروانے کی بجائے موقع پر پہنچ کرواپڈا آفس کے دونوں گیٹ بند کر دئیے۔ ایس ڈی او سرکل نمبر2اورنگزیب بھٹی نے اپنے موقف میں کہا ہے کہ عمردراز آصی کے بجلی کا میٹر بجلی چور کئے جانے کی وجہ سے اتارا گیا تھا جس پر اس نے اپنے وکلا ساتھیوں کے ہمراہ حملہ کیا۔

دوسری جانب ڈسٹرکٹ بار ایسوی ایشن چنیوٹ،بھوآنہ،لالیاں نے واپڈا کی غنڈہ گردی کے خلاف ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔جبکہ دوسری جانب ڈی ایس پی سٹی اظہر یعقوب کی جانب سے صحافیوں اور کیمرہ مینوں کے ساتھ ہونے والی بدتمیزی کے خلاف پریس کلب کے ہنگامی اجلاس میں چنیوٹ پولیس کی کوریج اور مکمل بائیکاٹ کا اعلان کیا ہے