اپیلٹ ٹربیونل کا فیصلہ قبول کرتا ہوں، فیصلے کیخلاف اپیل دائر کروں گا،شاہد خاقان عباسی

مجھ پر معلومات یا حقائق چھپانے کا الزام غلط ہے،تاحیات نا اہلی کا فیصلہ میری جماعت سے وفاداری کی سزا ہے، ایسے فیصلے انتخابات مشکوک بنا رہے ہیں ،سابق وزیراعظم

بدھ جون 23:21

اپیلٹ ٹربیونل کا فیصلہ قبول کرتا ہوں، فیصلے کیخلاف اپیل دائر کروں گا،شاہد ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ اپیلٹ ٹربیونل کا فیصلہ قبول کرتا ہوں تاہم اس فیصلے کیخلاف اپیل دائر کرونگا، مجھ پر معلومات یا حقائق چھپانے کا الزام غلط ہے، میری تاحیات نا اہلی کا فیصلہ میری جماعت سے وفاداری کی سزا ہے، ایسے فیصلے انتخابات مشکوک بنا رہے ہیں۔بدھ کو نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ (ن) کے رہنماء اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ میں اپیلٹ ٹریبونل کا فیصلہ قبول کرتا ہوں تاہم اس فیصلے کیخلاف اپیل دائر کرونگا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ میں نے کوئی معلومات نہیں چھپائی ہیں۔مجھ پر معلومات یا حقائق چھپانے کا لگایا گیا الزام غلط ہے۔ انہوں نے کہا کہ میری تا حیات نااہلی کا یہ فیصلہ مجھے میری جماعت سے وفاداری کی سزا ہے۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن ٹربیونل کے پاس تاحیات نااہل کرنے کا اختیار ہی نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے ہمیشہ ملک و قوم کی خدمت کی ہے،میں ان چیزوں سے گھبرانے والا نہیں ہوں۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے فیصلے انتخابات کو مشکوک بنا رہے ہیںالیکشن کمیشن کو اس فیصلے کا فوری نوٹس لینا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ میں گزشتہ 25 سال سے یہی اثاثے جمع کرا رہا ہوں۔