اداروں کی بہتری و ترقی کے لئے ہم سب کو اپنا حصہ ڈالنا چائیے ،

جامعہ بلوچستان کے ساتھ مختلف تعلیمی منصوبوں خاص کر سوفٹ ویئر اور کمپیوٹر کے شعبہ میں مشترکہ طور پر کام کیا جائے گا اور ہر ممکن تعاون و اشتراک عمل جامعہ کے ساتھ جاری رہے گی،سینیٹر محترمہ رخسانہ زبیری

بدھ جولائی 16:46

اداروں کی بہتری و ترقی کے لئے ہم سب کو اپنا حصہ ڈالنا چائیے ،
کوئٹہ۔11جولائی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 جولائی2018ء) سینیٹر محترمہ رخسانہ زبیری نے جامعہ بلوچستان کے تعلیمی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ اداروں کی بہتری و ترقی کے لئے ہم سب کو اپنا حصہ ڈالنا چائیے اور اپنے مقصد اور اہداف کو حاصل کرنے کے لئے بہترین پالیسیاں ترتیب دینا لازمی ہے۔ جامعہ بلوچستان کے ساتھ مختلف تعلیمی منصوبوں خاص کر سوفٹ ویئر اور کمپیوٹر کے شعبہ میں مشترکہ طور پر کام کیا جائے گا اور ہر ممکن تعاون و اشتراک عمل جامعہ کے ساتھ جاری رہے گی،ان خیالات کااظہار انہوں نے بدھ کے روز وفد کے ہمراہ جامعہ بلوچستان کے دورہ کے موقع پر جامعہ کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جاوید اقبال سے ان کے چیمبر میں ملاقات کے دوران کیا، اس موقع پر جامعہ کے رجسٹرار محمد طارق جوگیزئی، ڈاکٹر ندیم ملک، ڈاکٹر ظہور احمد بازئی، ڈاکٹر وحید نور اور دیگر افیسران بھی موجود تھے۔

(جاری ہے)

ملاقات کے دوران جامعہ بلوچستان کے تعلیمی سرگرمیوں، ترقیاتی منصوبوں، صوبے کے تعلیمی نظام ، اداروں کے درمیان بہتر تعلقات، مائیکروسوفٹ شعبہ میں جامعہ کے ساتھ تعاون و اشتراک عمل سمیت مختلف معاملات کا تبادلہ خیال کیا گیا۔وائس چانسلر نے وفد کو جامعہ بلوچستان آمد پر خوش آمد ید کہتے ہوئے کہا کہ یہ انتہائی خوشی کا باعث ہے کہ مکتب فکر کے نمائندگان جامعہ بلوچستان کا دورہ اور رہنمائی کررہے ہیںکیونکہ یہ صوبے کی مادر علمی درسگاہ ہے جو اعلیٰ تعلیم کو پروان چڑھانے سمیت بہتر انسانی وسائل کی فراہمی میں اہم کردار ادا کررہی ہے، صوبے کے مختلف علاقوں کے ہزاروں طلباء و طالبات کو نصابی و غیر نصابی سرگرمیوں کے مواقع مہیا کی جارہی ہیں۔

صوبے کے مختلف علاقوں میں یونیورسٹی سب کیمپسز کے قیام اور تمام کالجز جامعہ کے ساتھ منسلک ہیں۔ کیونکہ تعلیمی اداروں کی ترقی سے ہی معاشرے کی ترقی وابسطہ ہے اور جامعہ اپنے وژن کے تحت اپنی پالیسیاں ترتیب دے رہی ہے جو ترقی اور کامیابیوں کی جانب گامزن ہے۔ انہوں نے کہا کہ عام لوگوں کی زندگیوں میں بہتری اور آسانی پیدا کرنے کے لئے مشترکہ طور پر منصوبوں کو عملی جامہ پہنانا چائیے۔

ملک کے اعوان بالا اور پالیسی ساز اداروں اور تعلیمی ماہرین کا مشترکہ طور پر بہتر منصوبوں سے پائیدار پالیسیاں ترتیب دیئے جاسکتے ہیں ۔ اس موقع پر سینٹر محترمہ رخسانہ زبیری نے جامعہ بلوچستان کے تعلیمی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ اداروں کی بہتری و ترقی کے لئے ہم سب کو اپنا حصہ ڈالنا چائیے اور اپنے مقصد اور ادب کو حاصل کرنے کے لئے بہترین پالیسیاں ترتیب دینا لازمی ہے۔

جامعہ بلوچستان کے ساتھ مختلف تعلیمی منصوبوں خاص کر سوفٹ ویئر اور کمپیوٹر کے شعبہ میں مشترکہ طور پر کام کیا جائے گا اور ہر ممکن تعاون و اشتراک عمل جامعہ کے ساتھ جاری رہے گا۔ بعدا زاں وائس چانسلر نے سیکنڈ پوزیشن حاصل کرنے والے طلبہ و اساتذہ کے اعزاز میں ظہرانہ دیا جنہوں نے ملکی سطح پر انجینئرنگ ریبورٹ کونسیٹ 2018 جو کہEME اور NUST کے تعاون سے راولپنڈی میںمنعقد ہواجس میں بلوچستان سے پہلی مرتبہ جامعہ بلوچستان نے شرکت کی اور مقابلے میں سیکنڈ پوزیشن حاصل کی جو کہ جنرل یونیورسٹیوں میں ایک اعزازی مقام ہے۔

وائس چانسلر نے جامعہ کی ٹیم کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ کسی بھی تعلیمی مقابلے میں شرکت کرنا اور جامعہ کی نمائندگی انتہائی ضروری ہے۔ اور جامعہ کے طلبہ و اساتذہ اپنے پیشہ ورانہ صلاحیتوں سے ثابت کررہے ہیں کہ وہ کسی بھی مقابلے میں اپنی کامیابی کو ممکن بنا سکتے ہیں اور اس طرح کی سرگرمیوں سے مقابلے کے رجحان کو پروان چڑھایا جاسکتا ہے۔ اس موقع پر سینٹر محترمہ رخسانہ زبیری نے بھی ٹیم کے سائنسی روبورٹ مقابلے میں کامیبابی کو خوش آئند کرار دیا اور طلبہ کی حوصلہ افزائی کی۔آخر میں وائس چانسلر نے مہمانوں کو جامعہ کی جانب سے یادگاری شیلڈ پیش کیں اور ان کا شکریہ ادا کیا۔

متعلقہ عنوان :