نواز شریف کی سرکاری ٹی وی پر کوریج پر پابندی عائد

مجرم کے بارے میں خبروں یا ٹاک شوز میں بھی بات نہیں کی جا سکے گی

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین جمعرات جولائی 16:41

نواز شریف کی سرکاری ٹی وی پر کوریج پر پابندی عائد
لاہور (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 12 جولائی 2018ء) : سابق وزیر اعظم نواز شریف کی سرکاری ٹی وی چینل ''پی ٹی وی'' پر کوریج پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق مجرم کےبارے میں کسی بھی پروگرام ، ٹاک شو یا خبروں میں بات نہیں کی جائے گی۔ سرکاری ٹی وی چینل نے نواز شریف کی کوریج سے متعلق نئی حکمت عملی اپنا لی ہے۔ پی ٹی وی کے تمام ٹی وی چینلز پر پابندی کا آفس آرڈر بھی جاری کر دیا گیا ہے۔

آفس آرڈر میں کہا گیا کہ نواز شریف چونکہ مجرم ہیں لہٰذا سرکاری ٹی وی چینل پر ان کی کوریج نہیں ہو سکے گی۔ان کے بارے میں ٹاک شوز یا پروگرامز سمیت خبروں میں بھی بات نہیں کی جا سکے گی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق پی ٹی وی کو جاری کیے گئے آفس آرڈر میں مزید کہا گیا کہ مجرم شخص کے اشتہارات میں نمودار ہونے والا پیڈ کانٹینٹ کو بھی نہیں چلایا جائے گا۔

پی ٹی وی پر مسلم لیگ ن کے وہ اشتہارات، جس میں نواز شریف نمودار ہوتے ہیں، بھی سرکاری ٹی وی چینل پر نشر نہیں کیے جائیں گے۔ نواز شریف کا سرکاری ٹی وی چینل سے مکمل طور پر بلیک آؤٹ ہو گا۔ جمعہ کے روز نواز شریف جب لندن سے وطن واپس پہنچیں گے تو اس صورتحال میں جو بھی احتجاج ہو رہا ہو گا، اس کی کوئی کوریج نہیں کی جائے گی، سابق وزیر اعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کا وطن واپسی پر سرکاری ٹی وی چینل سے مکمل طور پر بلیک آؤٹ کیا جائے گا جبکہ مجرم کا پید تشہیری کانٹنٹ بھی نشر نہیں کیا جائے گا۔

اس پر بات کرتے ہوئے تجزیہ کار عدنان عادل نے کہا کہ ہمارے ملک کی ایک روایت بن چکی ہے کہ جب بھی کوئی شخص حکومت میں ہوتا ہے تو سرکاری ٹی وی چینل پی ٹی وی سارا وقت اسی کی کوریج کرتا رہتا ہے،اور جب وہ حکومت سے باہر نکل جاتا ہے تو اس کی کوریج بند ہو جاتی ہے۔۔نواز شریف کی جو تھوڑی بہت کوریج پی ٹی وی پر چل رہی تھی اب اُسے بھی بند کر دیا گیا ہے اور میرے خیال سے قانونی طور پر یہ بالکل صحیح فیصلہ ہے۔

عدالت سے سزا یافتہ مجرم کی کوریج کا کوئی اخلاقی جواز نہیں ہے اور یہ میڈیا کے ضابطہ اخلاق کی بھی خلاف ورزی ہے۔ مسلم لیگ ن اور شہباز شریف کی کوریج ہونی چاہئیے لیکن نواز شریف چونکہ ایک مجرم ہیں لہٰذا ان کی کوریج کا کوئی جواز نہیں بنتا ۔ پی ٹی وی کے ساتھ ساتھ باقی میڈیا کو بھی اس بارے میں سوچنا چاہئیے کہ ان کو کتنی کوریج دینی ہے ۔

Your Thoughts and Comments