سپورٹس نیوز )

گھر کے شیر پھر ڈھیر،بھارتی ٹیم لارڈزٹیسٹ کی دوسری اننگز میں بھی صرف 130رنز پر آل آئوٹ انگلینڈ نے کو ایک اننگز اور 159رنز سے شکست دیکر دوسرا ٹیسٹ جیت لیا،سیریز میں 2-0کی برتری حاصل کرلی جیمز اینڈرسن اور سٹورٹ براڈ نے چار ،چار وکٹیں حاصل کر بھارتی بیٹنگ لائن کے پرخچے اڑا دئیے،کرس وائوکس مین آف دی میچ قرار ہم شکست کے حقدار تھے،کوہلی کا اعتراف

اتوار اگست 23:10

لارڈز(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 اگست2018ء) انگلینڈ نے بھارت کو ایک اننگز اور 159رنز سے شکست دیکر دوسرے ٹیسٹ میچ میں کامیابی حاصل کرلی ہے،بھارتی بیٹنگ لائن دوسری اننگز میں بھی لڑکھڑا گئی اور صرف 130رنزپر ڈھیر ہوگئی ،جیمز اینڈرسن اور سٹورٹ براڈ نے چار ،چار وکٹیں حاصل کر بھارتی بیٹنگ لائن کے پرخچے اڑا دئیے ۔ انگلینڈ نے پانچ میچز کی سیریز میں 2-0کی برتری حاصل کرلی ہے ۔

لارڈز کے مقام پر بارش سے متاثرہ ٹیسٹ میچ کا پہلا روز مکمل طور پر بارش کی نذر ہوگیا تھا ۔اتوار کو چوتھے روز بھارتی ٹیم اپنی دوسری اننگز میں صرف 130رنز بنا کر پویلین لوٹ گئی ،انگلینڈ کی طرف سے جیمز اینڈرسن جنہوں نے لارڈز کے مقام پر 100وکٹیں لینے کا اعزاز حاصل کیا انہوں نے 23رنز کے عوظ چار وکٹیں حاصل کیں اور انکے ساتھی فاسٹ بائولر سٹورٹ براڈ نے 44رنز دیکر چار کھلاڑیوں کو آئوٹ کیا ۔

(جاری ہے)

انگلینڈ کی طرف سے بین سٹوکس کی جگہ ٹیم میں شامل کئے گئے کرس وائوکس نے انکی پہلی اننگر میں 137رنز ناٹ آئوٹ بنائے یہ انکی پہلی ٹیسٹ سنچری تھی ، انگلینڈ نے پہلی اننگز 396 رنز سات کھلاڑی آئوٹ پر ڈکلیئر کردی تھی ۔وائوکس نے جونی بئیرسٹو کے ساتھ بھارت کیخلاف چھٹی وکٹ کیلئے ریکارڈ 189رنز کی شراکت قائم کی جب ایک وقت پر انگلینڈ کے چار کھلاڑی صرف 89رنز بناکر آئوٹ ہوگئے تھے ۔

کرس وائوکس کو مین آف دی میچ قراردیا گیا ۔ اسکے جواب میں بھارت کی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 107رنز پر ڈھیر ہوگئی تھی ،جیمز اینڈرس نے انگلینڈ کی طرف سے سوئنگ بائولنگ کیلئے ساز گار کنڈیشنز میں 20رنز کی بدولت سات وکٹیں حاصل کی تھیں ۔بھارتی ٹیم پورے میچ کے دوران صرف 82.2اوورز کھیل سکی جبکہ انگلینڈ نے واحد اننگز میں 88.1اوورز بیٹنگ کی ۔ شکست کے بعد بھارتی ٹیم کے کپتان ویرات کوہلی نے اعتراف کیا کہ ہم شکست کے حقدار تھے دونوں ٹیموں کے مابین تیسرا ٹیسٹ میچ ہفتہ کے روز ٹرینٹ بریج کے مقام پر کھیلا جائے گا۔جس انداز میں ہم نے کھیل پیش کیا یہ میرے لیئے قابل فخر نہیں ہے ۔