بیگم کلثوم نوازکی نمازجنازہ کیلئے سکیورٹی پلان تشکیل

جاتی امراء اورجنازے کے مقام پر4 ایس پیز، 6 ڈی ایس پیز،17ایس ایچ اوز اور800 سے زائد اہلکارڈیوٹی دیں گے،نوازشریف کی رہائشگاہ کی طرف جانےوالے راستوں کوسیل کردیا گیا۔ڈی آئی جی آپریشنز

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعہ ستمبر 15:22

بیگم کلثوم نوازکی نمازجنازہ کیلئے سکیورٹی پلان تشکیل
لاہور(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14ستمبر 2018ء) لاہور پولیس نے سابق خاتون اول بیگم کلثوم نوازکی نماز جنازہ کیلئے سکیورٹی پلان تشکیل دے دیا ہے، جس کے تحت جاتی امراء میں 4 ایس پیز، 6 ڈی ایس پیز،17ایس ایچ اوز اور800 سے زائد اہلکارڈیوٹی دیں گے، تاہم سابق وزیراعظم نوازشریف کی رہائشگاہ کی طرف جانےوالے راستوں کوسیل کردیا گیا ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہورپولیس نے سابق وزیراعظم نوازشریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نوازکی نمازہ جنازہ کے سلسلے میں سیکیورٹی پلان ترتیب دے دیا ہے۔

جس کے تحت جاتی امراء کی طرف جانے والے تمام راستوں پر سیکیورٹی سخت کردی گئی ہے۔ راستوں اور جنازے کے مقام پر4 ایس پیز، 6 ڈی ایس پیز،17ایس ایچ اوز اور800 سے زائد اہلکارڈیوٹی دیں گے۔ ڈی آئی جی آپریشنزشہزاد اکبر کا کہنا ہے کہ جنازے کے شرکاء کی پارکنگ کے خاطر خواہ انتظامات کیے گئے ہیں۔

(جاری ہے)

پارکنگ کوجنازے کی جگہ سے ایک مخصوص فاصلے پربنایا گیا ہے۔

تاکہ کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہ آئے۔ ڈی آئی جی آپریشنز نے مزید کہا کہ پولیس اہلکاروں کی ذمہ داری لگائی گئی ہے کہ نمازجنازہ میں شرکت کیلئے ہرگاڑی اورہرشخص کوچیک کرکے جانے کی اجازت دی جائے۔ جبکہ پولیس کی غفلت کی صورت میں محکمانہ کاروائی کی جائے گی۔ دوسری جانب گزشتہ روزسابق خاتون اول بیگم کلثوم نوازکی لندن میں نمازجنازہ ادا کی گئی۔

لندن ریجنٹ پارک مسجد میں کلثوم نوازکی نمازجنازہ امام شیخ خلیفہ عزت نے پڑھائی۔ نمازجنازہ میں مرحومہ کے صاحبزادے حسن اور حسین نواز، سمدھی اسحاق ڈار، شہبازشریف، چوہدری نثار، عزیز واقارب، سابق وزیراعظم چودھری عبدالمجید سمیت پاکستانی کمیونٹی کے افراد نے شرکت کی۔ جس کے بعد شہبازشریف اور اہلخانہ پی آئی اے کی پرواز کے ذریعے لندن سے کلثوم نواز کی میت لیکر آج صبح لاہور پہنچے۔

جہاں سے میت کوایمبولینس کے ذریعے شریف میڈیکل کمپلیکس پہنچایا گیا۔ شریف میڈیکل کمپلیکس میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز سمیت دیگر اہلخانہ نے کلثوم نواز کا دیدار کیا۔ نوازشریف تقریباً آدھ گھنٹہ تک میت کے پاس موجود رہے۔اور اپنی بیٹی مریم نواز دلاسا بھی دیتے رہے۔ تاہم کلثوم نواز کی نمازجنازہ آج شام ساڑھے پانچ بجے شریف میڈیکل سٹی کے گراؤنڈ میں ادا کی جائے گی۔

نماز جنازہ معروف مذہبی اسکالر مولانا طارق جمیل پڑھائیں گے۔ واضح رہے سابق وزیراعظم نواز شریف کی اہلیہ سابق خاتون اول بیگم کلثوم نواز لندن میں11ستمبر بروزمنگل کوانتقال کرگئی تھیں، کلثوم نوازکینسر کے مرض میں مبتلا تھیں، ایک سال25 دن لندن میں زیرعلاج رہیں، انہیں پھیپھڑوں کی سنگین بیماری کے باعث اسپتال منتقل کیا گیا تھا جہاں وہ خالق حقیقی سے جا ملیں۔

کلثوم نواز17اگست 2017 میں کینسر کی بیماری کے علاج کیلئے لندن گئی تھیں۔ گزشتہ سال 22 اگست کوکلثوم نواز کی بیماری کی تصدیق ہوئی تھی۔ بیگم کلثوم نواز13مہینے لندن میں زیرعلاج رہیں۔ سابق خاتون اول بیگم کلثوم نوازکی وفات کے بعد ان کے شوہر سابق وزیراعظم نوازشریف ،بیٹی مریم نواز، داماد کیپٹن ر صفدرجوکہ ایون فیلڈ ریفرنس میں اڈیالہ جیل میں قید کاٹ رہے ہیں ۔ان کو5دن کیلئے پیرول پررہائی دی گئی۔ تاکہ وہ اپنی اہلیہ کے نمازجنازہ میں شرکت کرسکیں۔