نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی سزا معطلی ، تینوں مجرمان نے آسمان کی طرف دیکھ کر اللہ کا شکر ادا کیا

عدالت کی جانب سے روبکار ملتے ہی تینوں قیدیوں کو رہا کر دیا جائے گا ۔ جیل ذرائع

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین بدھ ستمبر 15:28

نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی سزا معطلی ، تینوں مجرمان نے ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 19 ستمبر 2018ء) : اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم نواز شریف ، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر کی سزا معطل کر دی ۔ جیل ذرائع کے مطابق اڈیالہ جیل میں قید سابق وزیراعظم نواز شریف ، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر کو اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے سے آگاہ کر دیا ہے۔

تینوں قیدیوں نے آسمان کی طرف دیکھ کر اللہ کا شکر ادا کیا۔ جیل ذرائع کا کہنا ہے کہ عدالت کی جانب سے روبکار ملتے ہی تینوں قیدیوں کو رہا کر دیا جائے گا۔ خیال رہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم نواز شریف ،مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی سزا کی معطلی کی درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے تینوں قیدیوں کی رہائی کا حکم دے دیا ہے۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ آج اسلام آبا دہائی کورٹ کے جسٹس اطہر من اللہ اور جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب پر مشتمل دو رکنی بینچ نے درخواستوں پر سماعت کی۔نیب پراسیکیوٹر اکرم قریشی نے سزا معطلی کی مخالفت میں دلائل دئیے۔جسٹس اطہر من اللہ کا کہنا تھا کہ کوئی ایسا ریکارڈر دیں جو نواز شریف کا کسی بھی حیثیت میں کردار ثابت کرتا ہو۔کیا صرف مفروضے کی بنیاد پر سزا ہوسکتی ہے؟ اس پر نیب پراسیکیوٹر کا کہنا تھا کہ قانون شہادت تو ایسا کرنے کا کہتا ہے۔

میں نے سپریم کورٹ کا فیصلہ بھی بتایا ہے۔جس پر عدالت نے کہا کہ وہ منارٹی ججمنٹ ہے۔نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ قانون شہادت کے اصول عام مقدمات میں مختلف جبکہ اس کیس میں مختلف ہیں۔دلائل مکمل ہونے کے بعد عدالت نے فیصلہ محفوظ کر لیا جو اب سنایا جا چکا ہے۔ جس کے تحت سابق وزیراعظم نواز شریف ، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور داماد کیپٹن (ر) صفدر کی کی سزا معطل کر دی گئی ہے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے بینچ نے تینوں قیدیوں رہائی کا حکم دیا۔ ملزمان کو 5,5 لاکھ روپے کے ضمانتی مچلکے بھی جمع کروانے کا حکم دیا گیا ہے۔اس کے ساتھ ہی فیصلے کے خلاف اپیل کی درخواستیں بھی منظور ہو چکی ہیں اور ان کے فیصلے تک تینوں ملزمان ضمانت پر رہا رہیں گے۔ اس موقع پر اسلام آباد ہائیکورٹ میں پارٹی صدر شہباز شریف ، مسلم لیگ ن کے کارکنان اور مرکزی رہنماؤں کی بڑی تعداد موجود تھی۔

فیصلہ سنتے ہی کارکنان میں خوشی کی لہر دوڑ گئی اور انہوں نے نعرے بازی شروع کر دی ہے۔ یاد رہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف ،مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کو ایون فیلڈ ریفرنس کیس میں نیب عدالت نے سزا دی تھی جس کے تحت سابق وزیراعظم نواز شریف کو 11 اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کو 8 جب کہ داماد کیپٹن (ر) صفدر کو ایک سال قید کی سزا سنائی گئی۔

احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے فیصلے میں نوازشریف کو 80 لاکھ پاؤنڈ اور مریم نواز کو 20 لاکھ پاؤنڈ جُرمانہ بھی عائد کیا اور ایون فیلڈ اپارٹمنٹس کو ضبط کرنے کا بھی حکم دیا جب کہ عدالت نے کیپٹن (ر) صفدر پرکوئی جُرمانہ عائد نہیں کیا۔ سابق وزیراعظم نواز شریف ، ان کی صاحبزادی مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر اڈیالہ جیل میں قید تھے جہاں انہوں نے 60 سے زائد دن سزا کاٹی ۔