وزیراعظم عمران کراچی میں پاکستانی بنگالیوں کوشناختی کارڈجاری اور محصورین مشرقین پاکستان کو بنگلہ دیش کے کیمپوں سے واپس لانے کے وعدے پر فوری عمل درآمد کروائیں، تحریک لبیک پاکستان سندھ کامطالبہ

بدھ ستمبر 23:01

وزیراعظم عمران کراچی میں پاکستانی بنگالیوں کوشناختی کارڈجاری اور ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 ستمبر2018ء) تحریک لبیک پاکستان سندھ نے وزیراعظم عمران خان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ کراچی میں اپنے اعلان کردہ وعدے کے مطابق پاکستانی بنگالیوں کوشناختی کارڈجاری کرنے اور محصورین مشرقین پاکستان کو بنگلہ دیش کے کیمپوں سے واپس لانے کے وعدے پر فوری عمل درآمد کروائیں۔ جبکہ افغانیوں کا مسئلہ پاکستانی بنگالیوں اور محصورین مشرقی پاکستان سے جدا ہے ان کی باعزت افغانستان واپسی ہونی چاہیئے۔

پاکستان پیپلز پارٹی کو بھی یاد رکھنا چاہیئے کہ اسے اب تک ملک میں وفاقی جماعت تصور کیا جاتا ہے جبکہ سقوط مشرقی پاکستان کے بعد 1972ئ میں ذوالفقار علی بھٹو نے بھی یہ واضح اعلان کیا تھا کہ جو بنگالی پاکستان میں رہنا چاہتے ہیں وہ یہاں رہ سکتے ہیں لہذا پیپلز پارٹی جیسی قومی جماعت لسانی اور نسلی تعصب کی بات کرکے اپنی قومی ساکھ کو خراب نہ کرے یہ بات ٹی ایل پی کراچی کے امیرعلامہ رضی حسینی نقشبندی کی صدارت میں ہونے والے مشاورتی اجلاس میں ایک قرار داد کے ذریعے کیا گیا۔

(جاری ہے)

جس میں علامہ امیر حسین امجدی، علامہ حافظ شفیع عالم، علامہ محمد حسین قادری،علامہ نورالسلام فیضی، علامہ خلیل قادری غلام ہاشم نورانی، علامہ نورالعالم ودیگرعلمائ کرام نے شرکت کی۔ مفتی غلام غوث بغدادی نے کہا کہ ذوالفقار علی بھٹو اور نواز شریف کے دور میں محصورین مشرقی پاکستان کو واپس لایا گیا ہے اور رابطہ عالمی اسلامی کے پاس محصورین کو واپس لانے کیلئے کرڑروں روپے کا فنڈبرسوں سے موجود ہے، بنگلہ دیش میں پڑے محصورین پاکستانی وہ ہیں جنہوں نے پاکستان کے قیام اور سلامتی کیلئے دوبارجنگ لڑی ہے انہیں پاکستانی تسیلم نہ کرنے والے ملک دشمن اور انتہاپسندہی تصور کیے جاسکتے ہیں سقوط مشرقی پاکستان میں قادیانیوں کے کلید ی کردار کے علاوہ لسانی اورنسلی تعصب کا عنصر بھی شامل رہا ہے لہذا قومی تاریخ کے اس نازک دور میں نسلی اور لسانی تعصب کو ہوا دینا قومی یکجہتی اور ملکی سالمیت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچانے کے مترداف ہے۔

لہذاوفاقی حکومت اپنے اصولی موقف کو بے جامشاورت کی نذرنہ کری.1971سے پہلے تمام پاکستانی بنگالیوں کو قومی شناختی کارڈ جاری کرنے کے علاوہ حکومت محصورین پاکستان کو وطن واپس لانے کا باقاعدہ شیڈول جاری کرے۔