اوورسیز پاکستانیوں میں بڑی صلاحیت ہے، ان کی صلاحیتوں سے بھرپور فائدہ اٹھائیں گے،موجودہ حکومت پاکستان میں قانون کی حکمرانی اور احترام یقینی بنائے گی،معیشت کو مستحکم کرنے کا چیلنج قبول کیا ہے، تمام کنسٹرکشن کمپنیوں کو پاکستان آنے کی دعوت دیں گے،تعمیراتی شعبہ میں سرمایہ کاری کے لئے ون ونڈو سہولت فراہم کی جائے گی،ایک مرتبہ گورننس کا نظام بہتر ہوگیا اور بدعنوانی کم ہوگئی تو ملک ترقی اور خوشحالی کی نئی راہ پر گامزن ہو جائے گا،

وزیراعظم عمران خان کا شاہ فیصل محل میں سعودی عرب میں مقیم پاکستانی کمیونٹی سے خطاب ْ

جمعرات ستمبر 00:30

جدہ ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 ستمبر2018ء) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانیوں میں بڑی صلاحیت ہے اور ہم ان کی صلاحیتوں سے بھرپور فائدہ اٹھائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو جدہ میں شاہ فیصل محل میں سعودی عرب میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے ارکان سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سعودی عرب میں مقیم پاکستانی تاجروں‘ سرمایہ کاروں، ڈاکٹرز‘ ٹیچرز‘ ماہرین تعلیم‘ انجینئرز ‘ کنٹریکٹرز اور بلڈرز نے بیرون ملک پاکستانیوں کو اپنے خیالات کا موقع دینے پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا۔

وزیراعظم نے نئی حکومت پر اعتماد کا اظہار کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ موجودہ حکومت پاکستان میں عوام کی خدمت کے لئے کام کرے گی،قانون کی حکمرانی اور احترام یقینی بنائے گی۔

(جاری ہے)

وزیراعظم نے کہا کہ اوورسیز وزارت اس انداز میں تشکیل دی جائے گی کہ یہ صحیح معنوں میں بیرون ملک مقیم پاکستانیوں اور سرمایہ کاروں کی خدمت کر سکے گی اور ان کے مسائل کو حل کرنے کی کوشش کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت نے معیشت کو مستحکم کرنے کا چیلنج قبول کیا ہے۔حکومت تمام کنسٹرکشن کمپنیوں کو پاکستان آنے کی دعوت دے گی اور تعمیراتی شعبہ میں سرمایہ کاری کے لئے ون ونڈو کے ذریعے سہولت فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ اقتدار میں آنے کے بعد ان کی بدعنوانی اور قبضہ گروپوں کے خلاف جنگ ہے۔حکومت نے اسلام آباد میں تجاوزات کے خلاف مہم شروع کی ہے اور اب تک 300 ارب روپے کی اراضی خالی کرائی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی جغرافیائی ‘ تزویراتی پوزیشن ہونے کے باعث ملک خوشحال ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے،اگر ایک مرتبہ گورننس کا نظام بہتر ہوگیا اور بدعنوانی میں کمی آگئی تو ملک ترقی اور خوشحالی کی نئی راہ پر گامزن ہو جائے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ڈیم کی تعمیر کے لئے عوامی ردعمل بھرپور تھا،انہوں نے اعتماد ظاہر کیا کہ پانچ سال میں ڈیم بننا چاہیے۔ وزیراعظم نے کہا کہ گورنر ہائوس کھولنے کے بعد نئی حکومت لوگوں کی نوآبادیاتی سوچ بدلنے کی کوشش کر رہی ہے۔ انہوں نے وعدہ کیا کہ پاکستان حقیقی فلاحی ریاست بنے گا۔