نواسہ رسول ؐ جگر گوشہ بتول امام عالی مقام حضرت امام حسین ؓاور شہدائے کربلا کا یوم شہادت کل مذہبی عقیدت و احترام سے منایا جائے گا‘

فیصل ۱ٓباد، جھنگ، چنیوٹ ، ٹوبہ ٹیک سنگھ سمیت ملک بھر میں تعزیہ، علم، ذوالجناح کے ہزاروں بڑے و چھوٹے ماتمی جلوس نکالے جائیں گے، سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات

جمعرات ستمبر 17:29

نواسہ رسول ؐ جگر گوشہ بتول امام عالی مقام حضرت امام حسین ؓاور شہدائے ..
فیصل آباد۔20 ستمبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 ستمبر2018ء) نواسہ رسول ؐ جگر گوشہ بتول امام عالی مقام حضرت امام حسین ؓاورانکے ساتھی شہدائے کربلا کا یوم شہادت ۱ٓج جمعہ کو مذہبی عقیدت و احترام سے منایا جائے گاجبکہ اس موقع پر فیصل ۱ٓباد ڈویژن کے چاروں اضلاع فیصل ۱ٓباد، جھنگ، چنیوٹ ، ٹوبہ ٹیک سنگھ سمیت ملک بھر میں تعزیہ، علم، ذوالجناح کے ہزاروں بڑے و چھوٹے ماتمی جلوس نکالے جائیں گے نیزحساس ترین مقامات پر فوجی جوان ، رینجرز، پولیس اور ریزرو فورسز کے اہلکار سکیورٹی ڈیوٹی پر مامورہونگے ،علاوہ ازیںجگہ جگہ کلوز سرکٹ کیمرے نصب کر کے محرم کنٹرول رومز میں سخت مانیٹرنگ شروع کردی گئی ہے اور ڈپٹی کمشنرز، ڈسٹرکٹ پولیس ۱ٓفیسرز، کمشنرز، ریجنل پولیس ۱ٓفیسرز کے دفاتر میں قائم ان کنٹرول رومز کو محکمہ داخلہ پنجاب اور وفاقی وزارت داخلہ کے صوبائی و سنٹرل کنٹرول رومز سے منسلک کردیا گیا ہے تاکہ بوقت ضرورت فوری اقدامات کو یقینی بنایا جاسکے،مزید بر ۱ٓںماتمی و عزاداری جلوسوں کے راستوں میںلگائی جانیوالی سبیلوں کو بھی چیک کرنے کا حکم دیا گیا ہے تاکہ کوئی شرپسند کسی بدمنی کیلئے شہروں داخل نہ ہوسکے جبکہ اس ضمن میںتمام بڑے شہروں کے داخلی و خارجی راستوں پر ۱ٓنے جانے والے مشکوک افراد اور مشتبہ گاڑیوں کی چیکنگ بھی شروع کردی گئی۔

(جاری ہے)

دوسری جانب جلوسوں کے راستوں میں غیر متعلقہ پانچ یا اس سے زائد افراد کے جمع اور چھتوں پر کھڑے ہونے پر پابندی عائد کردی گئی ہے اور ماتمی حضرات وزنجیر زنی کرتے ہوئے زخمی ہونیوالے مومنین کو فوری طبی امداد کی فراہمی کیلئے ریسکیو 1122 کو ہائی الرٹ رہنے کا حکم دیا گیا ہے اسی طرح ہسپتالوں میں بھی تمام ڈاکٹرز سمیت عملہ حاضر رہے گا۔نواسہ رسولؐ حضرت امام حسینؓ اور ان کے ساتھیوں کی اسلام کی سربلندی اور حق و صداقت کیلئے میدان کربلا میں دی گئی عظیم قربانی کی یاد میں۱ٓج یوم عاشور کے موقع پر مذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ ملک بھر کی مرکزی امام بارگاہوں سے تعزیہ، علم، ذوالجناح کے جلوس برآمد ہوںگے جو اپنے روایتی راستوں سے ہوتے ہوئے بعد نماز عصر اپنی منازل مقصود پر پہنچ کر اختتام پزیر ہونگے جہاں مجالس عزاء منعقد کی جائیں گی اور بعدازاں رات گئے مرکزی امام بارگاہوں میں محافل و مجالس شام غریباں منعقد کی جائیں گی۔

اس موقع پر وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی جانب سے فول پروف سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں ۔یوم عاشور کے موقع پر فیصل ۱ٓباد ڈویژن سمیت ملک بھر میںامن و امان کو یقینی بنانے کیلئے پولیس کے ساتھ ساتھ پاک فوج ،رینجر ز اور ایف سی کے دستے بھی حفاظتی ڈیوٹیوں پر تعینات ہونگے جبکہ بڑے شہروں میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر بھی پابندی ہوگی تاہم قانون نافذ کرنیوالے اداروں کے اہلکار اس سے مستثنیٰ ہوں گے۔

ماتمی و عزاداری جلوسوں کے روٹس اور حساس مقامات پر سی سی ٹی وی کیمرے نصب کرکے ان کی مانیٹرنگ بھی جاری ہے اورصوبائی، ڈویژن،ضلع و تحصیل سطح پر کنٹرول رومز قائم کر دیئے گئے ہیں۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ پنجاب کے حکم پرضابطہ فوجداری کی دفعہ 144کے تحت فیصل ۱ٓباد ڈویژن کے چاروں اضلاع فیصل ۱ٓباد، جھنگ، چنیوٹ ، ٹوبہ ٹیک سنگھ سمیت صوبہ بھر میں محرم کے جلوسوں ،ذوالجناح ،تعزیہ کے تمام روٹس پر واقع گھروں و دوکانوں کی چھتوں پر کھڑے ہونے ،دروازے کھڑکیاں کھلی رکھنے ،غیر متعلقہ افراد کے محرم جلوسوں کے قریب کھڑے ہونے ،آتشبازی کرنے، گولے ،کریکر چلانے،اسلحہ لیکر چلنے یا اس کی نمائش کو ممنوع قرار دیا گیا ہے ۔

ماتمی جلوسوں کے اندر تلاشی کے بغیر سامان لیجانے اور مجلس یا مجالس کے طے شدہ اوقات کی خلاف ورزی پر بھی سختی سے پابندی ہوگی جبکہ مختلف شہروں میں حساس مقامات و جلوسوں کی ہیلی کاپٹرز کے ذریعے فضائی نگرانی بھی کی جائے گی۔ فیصل ۱ٓبادڈویژنل انتظامیہ کے ترجمان نے کہا کہ ۱ٓج یوم عاشور کے جلوسوں کے راستوں پر بغیر اجازت سبیلیں لگانے ،نیاز تقسیم کرنے پر پابندی ہوگی اور تمام سرکاری ہسپتالوں میں ایمر جنسی نافذ رہے گی۔

مزید بر۱ٓں۱ٓج یوم عاشور کے موقع پر امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے اور ممکنہ خدشات سے بچائو ، فول پروف سکیورٹی سمیت تمام ممکن حفاظتی و تدارکی اقدامات کے پیش نظر فیصل آباد گھنٹہ گھر کے آٹھوں بازار اور حساس قرار دیئے گئے مقامات کو سیل کردیا جائے گا جبکہ تعزیہ ، ذوالجناح ، علم سرکار وفا کے ماتمی و عزاداری جلوسوں کے اوقات میں لنک گلیوں کو بھی خار دار تاریں لگا کر بند کرنے کی ہدایت کر دی گئی ہے تاکہ غیر متعلقہ یا شر پسند عناصر ان ملحقہ گلیوں کے راستے ماتمی جلوسوں میں شامل نہ ہو سکیں۔

انہوں نے بتایاکہ یوم عاشور کے سلسلہ میں حفاظتی و تدارکی انتظامات کے تحت جلوسوں کے راستوں میں چھتوں اور مختلف مقامات پر مورچہ بند پولیس اہلکاروں کی بھی ڈیوٹیاں لگا دی گئی ہیں۔ انہوںنے بتایاکہ حساس جلوسوں کے ارد گرد پولیس قومی رضاکاران اور اہل تشیع کے نوجوان ورکرزکا حصار بھی قائم کیا جائیگا تاکہ صرف مومنین حضرات ہی ماتمی جلوسوں میں شامل ہو سکیں ۔

انہوںنے عوام الناس سے بھی اپیل کی کہ وہ یوم عاشورہ کے جلوسوں کے راستوں میں بلاوجہ کھڑے ہونے سے گریز کریں ۔ انہوںنے کہاکہ اگر کسی جگہ پر کوئی مشکوک چیز یا شخص نظر آئے تو اس کی فوری اطلاع ریسکیو 15یا قریبی پولیس سٹیشن کو دی جائے۔دریں اثناء انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب محمد طاہر نے ۱ٓج یوم عاشور کے موقع پر محکمہ اوقاف کے زیر انتظام مساجد اور مزارات، درباروں،خانقاہوں کی خصوصی سکیورٹی کے بھی احکامات جاری کئے ہیںاورمتعلقہ اضلاع کے پولیس حکام کو ہدایت کی ہے کہ وہ محکمہ اوقاف کی درخواست کی روشنی میں جھنگ ، شورکوٹ ، فیصل آباد اور سرکل کے دیگر علاقوں میں موجود محکمہ اوقاف کی 44مساجداور 54 مزارات و درباروں سمیت صوبہ بھر میں موجود ایسے ہی مقامات کی فول پروف سکیورٹی یقینی بنائیں اور۱ٓج یوم عاشور کی رات تک کسی قسم کی غفلت کا مظاہرہ نہ کیاجائے۔

فیصل آباد ریجنل پولیس کے ترجمان نے بتایا کہ مذکورہ احکامات کی روشنی میں اگرچہ ان مساجد اور درباروں و مزاروں میں کوئی بھی حساس مقام شامل نہیں تاہم حفاظت خود اختیاری اور زائرین کی سہولت کیلئے انہیں مناسب سکیورٹی کی فراہمی یقینی بنائی جائے گی تاکہ یوم عاشور کے موقع پر کسی ناخوشگوار واقعہ کا احتمال نہ رہے۔