بھارت نے کشمیر کو قتل گاہ میں تبدیل کردیا ہے ، اشرف صحرائی

اتوار ستمبر 16:50

سرینگر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 ستمبر2018ء) مقبوضہ کشمیر میں تحریک حریت جموںوکشمیر کے چیئرمین محمد اشرف صحرائی نے کہا ہے کہ بھارت نے جموں وکشمیر کو قتل گاہ میں تبدیل کر دیا ہے اور وہ کشمیریوں کا خون پانی کی طرح بہا رہا ہے۔ انہوںنے کہا کہ قابض بھارتی فوجی کشمیری نوجوانوں کو کہیں جعلی مقابلوں میں تو کہیں پر امن مظاہرین پر گولیاں برسا کر قتل کرر ہے ہیں ۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق محمد اشرف صحرائی نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں بانڈی پورہ اور آری بل ترال میں شہید ہونے والے نوجوانوں کو شاندار خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ وادی کشمیر کو کربلا کا میدان بنادیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی حکمرانوں کی فرقہ پرست ذہنیت اور طاقت کے غرور کی وجہ سے پورا خطہ انتہائی غیر یقینی صورتحال سے دوچار ہے ۔

(جاری ہے)

محمد اشرف صحرائی نے کہا کہ کشمیری اپنے پیدائشی حق ، حقِ خودارادیت کے حصول کے لیے جدوجہد کر رہے ہیں مگر بھارت ان کے مطالبے کوپورا کرنے کے بجائے طاقت کا بے تحاشا استعمال کرکے مقبوضہ علاقے میں قبرستان آباد کررہا ہے۔ انہوںنے کہا کہ کشمیری نوجوان بھارتی جبری قبضے اور اسکے ظلم وجبر سے نجات کیلئے بر سر جدوجہد ہیں۔ محمد اشرف صحرائی نے کہا کہ شہداء کو خراج عقیدت ادا کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ انکے مقدس مشن کو مقصد کے حصول تک ہرقیمت پر جاری رکھا جائے۔

دریں اثنا تحریک حریت کے ترجمان نے ایک بیان میں قابض بھارتی فورسز کی طرف سے پلوامہ اور شوپیان کے مختلف دیہات میں محاصرے اور تلاشی کی کارروائی اور لوگوں کو تشدد اور مار ڈھاڑ کا نشانہ بنانے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے بدترین ریاستی دہشت گردی قرار دیا۔ ترجمان نے حریت رہنمائوں عبدالصمد انقلابی کو تھانہ سمبل، عاشق حسین نارچور اور سراج احمد کو تھانہ صدر اسلام آباد میں مسلسل غیر قانونی طور پر نظربند رکھنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے انتقامی کارروائی قرار دیا۔