پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان،اوگرا نے تردید کر دی

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ممکنہ اضافے کی خبریں بے بنیاد ہیں۔ترجمان اوگرا

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین پیر ستمبر 15:20

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان،اوگرا نے تردید کر دی
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 24 ستمبر 2018ء) : یکم اکتوبر سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا امکان ظاہر کیا گیا جس کی آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) نے تردید کر دی۔ترجمان اوگرا عمران غزنوی نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ممکنہ اضافے کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ممکنہ اضافے کی خبریں بے بنیاد ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یکم اکتوبرکے لیے اوگرا کا ورکنگ پیپر اگلے ہفتے تیار ہوگا جب کہ قیمتوں میں ردوبدل کی حتمی سمری 30 ستمبر تک بھجوائی جائے گی۔ یاد رہے کہ 22 ستمبر کو موصول ہونے والی خبر کے مطابق پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 10 روپے اضافے کا امکان ظاہر کیا گیا تھا۔ وزارت پٹرولیم کے ذرائع نے بتایا تھا کہ یکم اکتوبر سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 10 روپے اضافے کا امکان ہے۔

(جاری ہے)

پٹرول کی قیمت میں 6 روپے 30 پیسے فی لٹر اضافہ کیا جائے گا ۔ جبکہ مٹی کا تیل 10 روپے، لائٹ ڈیزل 4 روپے اور ہائی اسپیڈ ڈیزل 8 روپے 50 پیسے مہنگا ہونے کا امکان ہے۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری وزارت پٹرولیم کی منظوری کے بعد دی جائے گی البتہ اس حوالے سے ابھی کوئی حتمی اعلان نہیں کیا گیا۔ یاد رہے کہ وفاقی وزیر خزانہ نے روپے کی قدر میں کمی کی وجہ سے پٹرول کی قیمت میں اضافے کا عندیہ دیا تھا۔

تاہم اب اوگرا کے ترجمان عمران غزنوی نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ممکنہ اضافے کی خبروں کی تردید کر دی ہے۔ واضح رہے کہ حکومت نے گیس کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری بھی دی تھی۔ وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کی زیر صدارت ای سی سی کا اجلاس ہوا ۔ اجلاس میں گیس کی قیمتوں میں اضافے کی منظوری دی گئی۔ وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا کہ غریب صارفین پر کم سے کم بوجھ ڈالا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ غریب صارفین کو گیس پر یومیہ 80 پیسے اضافی دینا ہوں گے۔ ایل پی جی کی درآمد پر ٹیکس کم کر کے 10 فیصد کر دیا گیا ہے۔