بغاوت کا مقدمہ، عدالت نے نواز شریف کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا

عدالت نے سرل المیڈا کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری بھی جاری کر دیے، نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا حکم

پیر ستمبر 16:28

بغاوت کا مقدمہ، عدالت نے نواز شریف کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 ستمبر2018ء) لاہورہائیکورٹ نے بغاوت مقد مے میں سابق وزیراعظم نواز شریف کو 8 اکتوبر کو ذاتی حیثیت میں طلب کرلیا جبکہ اسی مقدمے میں سرل المیڈا کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے ان کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کا حکم دے دیا ہے پیر کو لاہور ہائیکورٹ میں سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی اور نواز شریف کیخلاف بغاوت کا مقدمہ درج کرنے کی درخواست پر سماعت ہوئی۔

لاہور ہائیکورٹ میں جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں تین رکنی فل بینچ نے سابق وزرائے اعظم نواز شریف اور شاہد خاقان عباسی کے خلاف بغاوت کی کارروائی کے لیے درخواست کی سماعت کی۔سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی لاہور ہائیکورٹ پہنچ گئے ہیں۔جب کہ عدالت نے نواز شریف کو بھی ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا ہے۔

(جاری ہے)

میڈیا رپورٹس کے مطابق عدالت نے نواز شریف کو 8 اکتوبر کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا ہے۔

نصیر بھٹہ ایڈووکیٹ نے کہا کہ نواز شریف آئندہ سماعت پر پیش ہو جائیں گے۔۔نواز شریف نے کہا کہ لوگ افسوس کے لیے آ رہے ہیں۔نواز شریف نے چالیسویں کے بعد کی تاریخ رکھنے کی استدعا کی ہے،تو جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے کہا کہ ٹھیک ہے مقدمے کو 8 اکتوبر کو سن لیں گے۔عدالت نے نواز شریف کو بھی بذریعہ جیل سپرنٹنڈنٹ طلبی کے نوٹس جاری کر رکھے ہیں جب کہ دوسری طرف شاہد خاقان عباسی لاہور ہائیکورٹ پہنچے ہیں۔

۔عدالت نے پہلے ہی شاہد خاقان عباسی کے وارنٹ گرفتاری جاری کر رکھے ہیں۔وکیل شاہد خاقان عباسی نصیر بھٹہ نے کہا آئندہ عدالت میں عدم پیشی نہیں ہو گی۔ تو جسٹس مظاہر علی اکبر نقوی نے ریمارکس دیے کہ ہاں جی دیکھ رہا ہوں شاہد خاقان عباسی ایک لمبے آدمی ہیں۔عدالت نے سرل المیڈا کے بھی ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کر دیے ہیں جب کہ ڈی آئی جی آپریشنز نے آئندہ سماعت پر سرل المیڈا کی پیشی یقینی بنانے کا حکم بھی دیا ہے۔جب کہ سرل المیڈا کا نام ای سی ایل میں بھی شامل کر نے کا حکم دیا ہے ۔عدالت نے مقدمے کی سماعت 8 اکتوبر تک ملتوی کر دی ہے۔