پنجاب اورخیبرپختونخواہ یکساں بلدیاتی نظام پرمتفق

دونوں صوبوں کامیئراورڈسٹرکٹ چیئرمین کا انتخاب جماعتی بنیادوں پرکروانے پراتفاق، جبکہ میئراورضلعی میئرکا انتخاب براہ راست کروانے پربھی متفق ہوگئے۔ وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ پیر ستمبر 18:59

پنجاب اورخیبرپختونخواہ یکساں بلدیاتی نظام پرمتفق
اسلام آباد(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔24 ستمبر 2018ء) وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس ہوا، جس میں پانی کی قلت، ڈیموں کی تعمیر، صفائی مہم سمیت صوبائی معاملات پرتبادلہ خیال کیا گیا، اجلاس میں پنجاب اورخیبرپختونخواہ یکساں بلدیاتی نظام پرمتفق ہوگئے ہیں، دونوں صوبوں کا میئراور ڈسٹرکٹ چیئرمین کا انتخاب جماعتی جبکہ یونین کونسل اور ویلج کونسل کا انتخاب غیرجماعتی بنیادوں پرکروانے پراتفاق ہوگیا، میئراورضلعی میئرکا انتخاب براہ راست کروانے پربھی متفق ہوگئے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق آج وزیراعظم ہاؤس میں وزیراعظم عمران خان کی صدارت میں مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس ہوا جس میں چاروں صوبائی وزراء اعلیٰ ، وزراء خزانہ ودیگر نے شرکت کی۔

(جاری ہے)

اجلاس میں وزیراعظم نے بلدیاتی نظام اور وسائل کی مساوی تقسیم سے متعلق اپنے وژن سے آگاہ کیا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ وفاق صوبوں کوساتھ لیکر چلنے کا خواہاں ہے۔

وفاق اور صوبوں کے مسائل اتفاق رائے سے حل کریں گے۔ وفاقی حکومت نے اہم معاملات میں صوبوں کوساتھ لیکر چلنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ قومی معاملات پرہم سب کواکٹھے ہوکر چلنا ہوگا۔ صوبوں کومزید خود مختار بنانا چاہتے ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ چاروں صوبوں میں یکساں طور پرصفائی مہم شروع کی جائے گی۔اس کے بعد پورے ملک میں صفائی مہم کومستقل طور پرجاری رکھا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ کراچی کیلئے پانی کے مسئلے کا حل اولین ترجیح ہے۔ کراچی کواضافی پانی دینے کیلئے تجاویز طلب کرلیں۔ گزشتہ ادوار کے ایل این جی درآمد کیلئے معاہدوں کی تفصیلات سامنے لانے کا فیصلہ کیا گیا۔ اسی طرح اجلاس میں پٹرولیم مصنوعات پالیسی 2012ء میں ترمیم کے معاملے پرصوبوں کی آراء لینے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔ وزیراعظم نے اجلاس میں پنجاب اور خیبرپختونخواہ کیلئے یکساں بلدیاتی نظام لانے کا فیصلہ بھی کرلیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب اور خیبرپختونخواہ دونوں صوبے میئر اور ڈسٹرکٹ چیئرمین کا انتخاب جماعتی بنیادوں پرجبکہ یونین کونسل اور ویلج کونسل کا انتخاب غیرجماعتی بنیادوں پرکروانے پرمتفق ہیں اسی طرح دونوں صوبے میئر اورضلعی میئر کا انتخاب براہ راست کروانے پربھی متفق ہیں۔تاہم اب دونوں میں اتفاق ہوگیا ہے دونوں صوبوں میں یکساں بلدیاتی نظام لایا جائے ۔

جس کے تحت دیہی سطح پرڈسٹرکٹ کونسل، یونین کونسل اور ویلج کونسل کا نظام لایا جائے گا۔ واضح رہے گزشتہ روز دورہ لاہور میں وزیر اعظم نے کہا تھا کہ لوکل باڈیز کے نظام کا مقصد اسٹیٹس کو کا خاتمہ ہے اور لوکل باڈیز کا ایک ایسا نظام متعارف کرایا جائے گا جس میں عوامی نمائندوں کو کسی سطح پر بھی بلیک میل نہ کیا جا سکے تاکہ وہ اپنی تمام تر توجہ عوام کی فلاح پر مرکوز کر سکیں۔ وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ نئے نظام کی بنیاد جمہوری اقدار پر مبنی ہوگی جس میں گورننس اور شفافیت کو یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ لوکل باڈیز نظام کو آئندہ 48 گھنٹوں میں حتمی شکل دی جائے۔