وزیر اعظم عمران خان کی زیرصدارت قیام کے بعد نیکٹا کا پہلا اجلاس

ادارے کی کارکردگی اور کردار کا جائزہ لینے کے لیے کمیٹی بنانے کا فیصلہ

Mian Nadeem میاں محمد ندیم منگل ستمبر 17:55

وزیر اعظم عمران خان کی زیرصدارت قیام کے بعد نیکٹا کا پہلا اجلاس
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔25 ستمبر۔2018ء) وزیر اعظم عمران خان کی زیرصدارت نیشنل کاﺅنٹر ٹیررازم اتھارٹی (نیکٹا) کے پہلے اجلاس میں ادارے کی کارکردگی اور کردار کا جائزہ لینے کے لیے کمیٹی بنانے کا فیصلہ کرلیا گیا. وزیراعظم ہاﺅس میں عمران خان کی زیر صدارت نیکٹا کے بورڈ آف گورنرز کا پہلا اجلاس منعقد ہوا. اجلاس میں چاروں صوبوں کے وزرا اعلیٰ، گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے حکام، وفاقی وزرا، ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) انٹرسروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی)، پولیس حکام سمیت دیگر اعلیٰ عہدیداروں نے شرکت کی.

(جاری ہے)

اجلاس کے دوران نیکٹا کے نیشنل کوآرڈینیٹر نے ادارے کے قیام کے بعد سے دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خاتمے کے حوالے سے بنائی گئی پالیسی اور ان پر عملدرآمد سے متعلق بریفنگ دی، اس دوران نیشنل ایکشن پلان کے 20 نکاتی ایجنڈے پر عمل درآمد کا تفصیلی جائزہ بھی لیا گیا. اس موقع پر وزیر اعظم عمران خان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے دہشت گردی اور انتہا پسندی کے خاتمے کے لیے طویل جنگ لڑی ہے اور اس دوران عام شہریوں اور سیکورٹی فورسز کے اہلکاروں نے ہزاروں جانوں کا نذرانہ پیش کیا ہے.

وزیر اعظم نے کہا کہ ملک میں آج بہتر سیکورٹی صورتحال میں تمام اسٹیک ہولڈرز کی مشترکہ جدوجہد ہے جبکہ مسلح افواج، انٹیلی جنس ایجنسیوں، پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کی بھی بڑی قربانیاں شامل ہیں. اجلاس کے دوران وزیر اعظم نے اس امر پر تشویش کا اظہار کیا کہ نیکٹا کے قیام کے بعد سے اب تک کوئی بورڈ آف گورنرز کا اجلاس منعقد نہیں ہوا.

وزیر اعظم نے کہا کہ سابق حکومت کی غفلت کے نتیجے میں نیکٹا اپنی کارکردگی بہتر بنانے پر توجہ نہیں دے سکا. انہوں نے کہا کہ موجودہ زمینی حقائق اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہیں کہ اس ادارے کو فعال کرنے کے ساتھ جدت سے ہم آہنگ ہونا چاہیے. اسی ضمن میں نیکٹا کے کردار اور کارکردگی کا جائزہ لینے کے لیے ایک کمیٹی قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا، یہ کمیٹی ایک ہفتے میں اپنی سفارشات وزیر اعظم عمران خان کو پیش کرے گی.

وزیراعظم نے نیکٹا کے کردار کا جائزہ لینے کے لیے کمیٹی تشکیل دی. اجلاس ہوا جس میں وزیر دفاع پرویز خٹک، وزیر خزانہ اسد عمر، وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی، وزیر قانون فروغ نسیم اور چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ سمیت ڈی جی آئی ایس آئی نے بھی شرکت کی. ذرائع کے مطابق اجلاس میں سیکورٹی اداروں کے مابین روابط بہتر بنانے اور نیکٹا کو فعال بنانے سے متعلق تجاویز پر غور کیا گیا، اس کے علاوہ اجلاس میں دہشت گردی کے خلاف اٹھائے جانے والے اقدامات کا جائزہ لیا گیا اور اداروں کے مابین معلومات کے تبادلے کو مزید موثر بنانے پر بھی غور کیا گیا.

اجلاس میں نیشنل ایکشن پلان کے 20 نکات پر عملدرآمد کا بھی جائزہ لیا گیا. اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے نیکٹا کے کردار پر نظرثانی کا فیصلہ کرتے ہوئے نیکٹا کے کردار کا جائزہ لینے کے لیے کمیٹی بھی تشکیل دیدی، کمیٹی ایک ہفتے میں اپنی تجاویز وزیراعظم کو پیش کرے گی.