کراچی، صدر مملکت کا چار سو گز کا پلاٹ قبضہ و جعلساز مافیا نے ملکر بیچ دیا

عارف علوی نے 400گز کا پلاٹ 1978میں خریدا تھا، مالیت 40سال پہلے 50ہزار روپے تھی

منگل ستمبر 20:49

کراچی، صدر مملکت کا چار سو گز کا پلاٹ قبضہ و جعلساز مافیا نے ملکر بیچ ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 ستمبر2018ء) شہر قائد کے علاقے گلستان جوہر میں قبضہ مافیا نے صدر پاکستان عارف علوی کو بھی نہیں چھوڑا، قبضہ مافیا نے کٹنگ کے بعد صدر مملکت کا پلاٹ بیچ ڈالا۔تفصیلات کے مطابق شہر کراچی کے علاقے گلستان جوہر میں قبضہ مافیا نے نئے پاکستان کے حکمرانوں کو پرانا چیلنج کردیا، قبضہ مافیا نے صدر عارف علوی کا 400 گز کا پلاٹ بیچ دیا، عارف علوی نے 400گز کا پلاٹ 1978میں خریدا تھا، پلاٹ کی مالیت 40سال پہلے 50ہزار روپے تھی۔

عارف علوی نے الیکشن کمیشن، تحریک انصاف کو اثاثوں میں پلاٹ ظاہر کیا، خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ پلاٹ کے ڈی اے افسران کی ملی بھگت سے فروخت کیا گیا ہے۔عارف علوی کی جانب سے کے ڈی اے میں درخواست بھی جمع کرائی گئی مگر معاملہ حل نہ ہوا، صدر نے درخواست 28فروری 2017کو جمع کرائی تھی۔

(جاری ہے)

ذرائع کے مطابق کے ڈی اے افسران کی ملی بھگت سے پہلے پلاٹ کے نمبر تبدیل کیاپھر اس کی کٹنگ کی گئی اس کے بعد اسے بیچ دیا گیا، گلستان جوہر بلاک 10میں صدر عارف علوی کے ساتھ یہ واقعہ پیش نہیں آیا بلکہ درجنوں شہری ایسے ہیں جو اپنے پلاٹ سے محروم ہوگئے۔

دوسری جانب متاثرہ شہریوںکا کہنا ہے کہ سمیع صدیقی معاملے میں دلچسپی نہیں لیتے، ڈی جی کے ڈی اے سمیع صدیقی کے پاس درخواستوں کا انبار لگا ہوا ہے لیکن شہریوں کے مسائل حل نہیں کیے جاتے ہیں۔