خواجہ محمد حارث نے العزیزیہ ریفرنس کیس میںاستغاثہ کے گواہ واجد ضیاپر جرح مکمل کرلی

آئندہ سماعت پر استغاثہ کے وکیل محبوب عالم پر خواجہ حارث جرح کا آغاز کرینگے حسین کے مطابق 6.5ملین پائونڈ سعودی عرب سے برطانیہ بھیجے گئے ،ْ5ملین پا ئونڈ 2006میں واپس آ گئے ،ْجے آئی ٹی نے ایسے کوئی شواہد اکھٹے نہیں کیے جو حسین نواز کے بیان کی تردید کریں ،ْواجد ضیاء کیا آپ نے جے آئی ٹی رپورٹ میں کبھی لکھا کہ ہل میٹل کا نام کچھ دستاویزات میں ہل میٹل ماڈرن انڈسٹری بھی استعمال ہوا ،ْخواجہ حارث ہم نے جے آئی ٹی رپورٹ میں کبھی ایسا نہیں لکھا ،ْ واجد ضیاء کا جواب …تفتیش میں جب نام کا جھگڑا ہی نہیں تو ایسے سوالات کیوں ،ْجج جہاں پرویز مشرف کا نام آ رہا ہے اس کے ساتھ اشتہاری بھی لکھیں ،ْہمارے کیس میں تو فوری ساتھ اشتہاری لکھ دیا جاتا ہے ،ْخواجہ حارث

منگل ستمبر 21:06

خواجہ محمد حارث نے العزیزیہ ریفرنس کیس میںاستغاثہ کے گواہ واجد ضیاپر ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 ستمبر2018ء) سابق وزیراعظم محمد نوازشریف کے وکیل خواجہ محمد حارث نے العزیزیہ ریفرنس کیس میںاستغاثہ کے گواہ واجد ضیاپر جرح مکمل کرلی ہے ،ْجس کے بعد ریفرنس کی کارروائی آخری مراحل میں داخل ہوگئی ہے ،ْ آئندہ سماعت پر استغاثہ کے وکیل محبوب عالم پر خواجہ حارث جرح کا آغاز کرینگیجبکہ واجد ضیاء نے کہا ہے کہ حسین کے مطابق 6.5ملین پائونڈ سعودی عرب سے برطانیہ بھیجے گئے ،ْ5ملین پا ئونڈ 2006میں واپس آ گئے ،ْجے آئی ٹی نے ایسے کوئی شواہد اکھٹے نہیں کیے جو حسین نواز کے بیان کی تردید کریں۔

منگل کو احتساب عدالت نمبر دو کے جج محمد ارشد ملک نے العزیزیہ ریفرنس کیس کی سماعت کی۔دوران جرح واجد ضیا نے کہاکہ نوازشریف کے صاحبزادے حسین نواز نے کہا کہ 6.5 ملین پا ئونڈ سعودی عرب سے برطانیہ بھیجے گئے ،ْحسین نواز نے جے آئی ٹی کے سامنے کہا کہ5ملین پا ئونڈ 2006میں واپس آ گئے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہا کہ جے آئی ٹی نے ایسے کوئی شواہد اکھٹے نہیں کیے جو حسین نواز کے بیان کی تردید کریں ،ْحسین نواز نے اپنے بیان میں کمپنی کا نام ہل میٹل اسٹبیلشمنٹ استعمال کیا۔

نواز شریف کے وکیل نے واجد ضیا سے استفسار کیاکہ کیا آپ نے جے آئی ٹی رپورٹ میں کبھی لکھا کہ ہل میٹل کا نام کچھ دستاویزات میں ہل میٹل ماڈرن انڈسٹری بھی استعمال ہوا۔واجد ضیانے کہا ہم نے جے آئی ٹی رپورٹ میں کبھی ایسا نہیں لکھا۔اس پر خواجہ حارث نے سوال پوچھاکہ کتنی ایسی دستاویزات ہیں جن میں کمپنی کا نام ہل میٹل اسٹیبلشمنٹ استعمال ہوا۔

جس پر واجد ضیانے کہاکہ بہت زیادہ دستاویزات میں نام استعمال ہوا ہے آپ گنتی پوچھیں گے مشکل ہو گا۔ احتساب عدالت کے جج محمد ارشد ملک نے ریمارکس دیئے کہ تفتیش میں جب نام کا جھگڑا ہی نہیں تو ایسے سوالات کیوں آپ اندازے سے بتا دیں کہ کتنی دستاویزات میں ہل میٹل اسٹیبلشمنٹ کا نام استعمال ہواہے۔استغاثہ کے گواہ نے کہاکہ جے آئی ٹی کاروائی کے دوران نوٹس میں آیا کہ بلال رسول سابق گورنر پنجاب میاں اظہر کے بھانجے ہیں۔

جے آئی ٹی ممبر کی سابق گورنر سے رشتہ داری سپریم کورٹ میں کارروائی کے دوران سامنے آئی ۔نوازشریف کے وکیل نے دوران جرح واجد ضیا سے پوچھاکہ کیا آ پ کے نوٹس میں آیا تھا کہ بلال رسول کی اہلیہ ق لیگ سے مخصوص نشستوں پر امیدوار نامزد ہوئیں اس پر واجد ضیانے جواب دیاکہ مجھے ایسا کچھ یاد نہیں کہ بلال رسول کی اہلیہ سے متعلق ایسا کچھ نوٹس میں آیا ہو۔

بلال رسول کی اہلیہ اب پی ٹی آئی کی سپورٹر ہیں ایسا بھی کچھ یاد نہیں ۔جے آئی ٹی کے دوسرے ممبر عامر عزیز کی مشرف دور میں کی نیب کے ساتھ بینکنگ ایکسپرٹ کے طور پر وابستگی بھی میرے علم میں تھی ،ْیہ درست ہے کہ 2000میں حدیبیہ پیپر ملز کا ریفرنس دائر ہوا ،ْیہ مجھے یاد نہیں کہ عامر عزیز اس کی تفتیش میں شامل تھے۔میرے نوٹس میں تھا کہ عرفان منگی جے آئی ٹی رکن منتخب ہوئے وہ نیب کوئٹہ میں کام کر رہے تھے ۔

یہ میرے علم میں تھا کہ عرفان منگی کیخلاف کوئی انکوائری بھی چل رہی تھی ۔یہ مجھے یاد نہیں کہ عامر عزیز حدیبیہ پیپر ملز کی تفتیش میں بھی شامل تھے۔ایک مو قع پر خواجہ حارث نے کہاکہ جہاں پرویز مشرف کا نام آ رہا ہے اس کے ساتھ اشتہاری بھی لکھیں ،ْہمارے کیس میں تو فوری ساتھ اشتہاری لکھ دیا جاتا ہے۔اس پر پراسیکیوٹر نیب بولے کہ مشرف الگ کیس میں اشتہاری ہیں۔

خواجہ حارث نے جواب دیاکہ تو یہاں کیا انکے نام کے ساتھ قابل احترام مشرف لکھیں۔خواجہ حارث کی دوران جرح جج محمد ارشد ملک نے خواجہ حارث حارث سے مکالمہ کرتے ہوئے کہ آپ نے اتنی طویل جرح کر لی ہے اب واجد ضیا جرح کے عادی ہو گئے ہیں ،ْجرح سے فارغ ہو کر واجد ضیا تو کچھ دن سوچیں گے کہ وہ کیا کریں ،ْایک مصروفیت کا عادی ہو جانے کے بعد بندا کچھ دن ضرور سوچتا ہے کہ وہ کیا کری بعد ازاں عدالت نے کیس کی سماعت ستائیس ستمبر تک ملتوی کردی ،ْآئندہ سماعت پر استغاثہ کے وکیل محبوب عالم پر خواجہ حارث جرح کا آغاز کرینگے۔