بیک وقت تین طلاقیں دینے پر سزاوں کا مجوزہ بل تیار کر لیا گیا

اسلامی نظریاتی کونسل نے بیک وقت تین طلاقیں دینے والے کیلئے ایک سال قید اور ایک لاکھ روپے جرمانے کی تجویز دے دی

muhammad ali محمد علی منگل ستمبر 21:15

بیک وقت تین طلاقیں دینے پر سزاوں کا مجوزہ بل تیار کر لیا گیا
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 ستمبر2018ء) بیک وقت تین طلاقیں دینے پر سزاوں کا مجوزہ بل تیار کر لیا گیا، اسلامی نظریاتی کونسل نے بیک وقت تین طلاقیں دینے والے کیلئے ایک سال قید اور ایک لاکھ روپے جرمانے کی تجویز دے دی۔ تفصیلات کے مطابق اسلامی نظریاتی کونسل نے بیک وقت تین طلاقیں دینے پر سزا کا تعین کرنے، کم سنی کی شادی اور خواتین کے وراثتی حقوق سے متعلق قانون سازی کے حوالے سے اہم اجلاس طلب کر لیا ہے۔

اسلامی نظریاتی کونسل کا اجلاس 26اور27 ستمبر کو منعقد ہوگا جس کیلئے تمام ممبران کو دعوت نامے ارسال کردئیے گئے ہیں۔ اسلامی نظریاتی کونسل کے ذرائع کے مطابق کونسل کا اجلاس  بروز بدھ اور جمعرات کو منعقد ہوگا۔ اجلاس میں تین طلاقیں ایک ساتھ دینے کے بارے میں اراکین کی رائے کے بعد ماڈل بل تیار کیا جائے گا جسے قانون سازی کیلئے پارلیمنٹ ہائوس کو بھجوایا جائے گا۔

(جاری ہے)

اجلاس میں خواتین کے وراثتی حقوق سے متعلق سفارشات پر بھی غور ہوگا جبکہ کم سنی کی شادی سے متعلق سفارشات بھی اجلاس میں پیش کی جائیں گی۔ ذرائع کے مطابق اسلامی نظریاتی کونسل نے بیک وقت تین طلاقوں پر سزاوں کے معاملے پر ابتدائی اور مجوزہ بل بھی تیار کر لیا ہے۔ مجوزہ بل کے تحت اسلامی نظریاتی کونسل نے بیک وقت تین طلاقیں دینے والے کیلئے ایک سال قید اور ایک لاکھ روپے جرمانے کی تجویز دی ہے۔ اسلامی نظریاتی کونسل کی جانب سے تیار کردہ مجوزہ بل پارلیمنٹ کی منظوری کے بعد ہی نافذ ہو سکے گا۔

متعلقہ عنوان :