البغدادی کا انتقام ،داعش کے 300 سے زیادہ ارکان کو موت کے گھاٹ اتاردیا

زیرِ قبضہ علاقوں کا بڑا رقبہ ہاتھ سے نکل جانے کے بعد تنظیم کے اندر غداریوں کی رپورٹوں کا انبار لگ گیا،برطانوی ٹی وی

جمعہ اکتوبر 15:52

البغدادی کا انتقام ،داعش کے 300 سے زیادہ ارکان کو موت کے گھاٹ اتاردیا
بغداد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 اکتوبر2018ء) عراق اور شام میں داعش کی پے درپے شکستوں اور اس کے زیرِ قبضہ علاقوں کا بڑا رقبہ ہاتھ سے نکل جانے کے بعد تنظیم کے اندر غداریوں سے متعلق خبروں اور رپورٹوں کا انبار لگ گیا ہے۔اس سلسلے میں برطانوی اخبار نے عراقی انٹیلی جنس کی رپورٹوں کے حوالے سے بتایا کہ زور دار شکستوں کے بعد داعش کے سربراہ ابو بکر البغداد نے غداری کے شبہے میں اپنے 300 سے زیادہ ارکان کو موت کے گھاٹ اتار دینے کا حکم دیا۔

مقامی میڈیا میں زیر گردش رپورٹوں کے مطابق موت کی نیند سلا دیے جانے والے تنظیم کے اہم کمانڈروں میں ابو البراء الانصاری، سیف الدین العراقی، ابو عثام التل عفری، ابو ایمان الموحد اور مروان حدید الصوری شامل ہیں۔ادھر مذکورہ رپورٹوں میں بتایا گیا ہے کہ دہشت گرد تنظیم کے بعض مسلح افراد البغدادی کے منصوبوں کا علم ہو جانے کے بعد جان کو درپیش خطرے کے سبب نامعلوم مقامات کی جانب فرار ہو گئے۔

(جاری ہے)

یاد رہے کہ رواں برس اگست میں ابوبکر البغدادی کی ایک صوتی ریکارڈنگ سامنے آئی تھی جس میں اس نے اپنے پیروکاروں پر زور دیا تھا کہ وہ ہر مقام پر لڑائی میں ثابت قدم رہیں۔ واضح رہے کہ 2014ء میں عراق اور شام کے وسیع رقبوں پر خلافت کی ریاست کے اعلان کے بعد داعش کے زیر قبضہ آنے والی مجموعی اراضی میں سے 90% علاقہ تنظیم کے ہاتھ سے نکل چکا ہے۔

متعلقہ عنوان :