این اے 56 کا ضمنی انتخاب ،پاکستان تحریک انصاف اپنی غلطیوں کی وجہ سے ہاری

پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی نے ضمنی انتخاب میں مسلم لیگ ن کے اُمیدوار کی حمایت کی ہدایت کی تھی

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین پیر اکتوبر 09:31

این اے 56 کا ضمنی انتخاب ،پاکستان تحریک انصاف اپنی غلطیوں کی وجہ سے ہاری
اٹک (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 15 اکتوبر 2018ء) : اٹک کے حلقہ این اے 56 میں گذشتہ روز ہونے والے ضمنی انتخاب میں پاکستان تحریک انصاف کو بُری شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ لیکن اس حلقے میں ہونے والے ضمنی انتخاب میں پی ٹی آئی کی ناکامی کی اندرونی وجہ کچھ اور ہی نکلی ۔تفصیلات کے مطابق اٹک کے حلقہ این اے 56 میں مسلم لیگ ن کے اُمیدوار ملک سہیل کامیاب ہوئے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے خرم علی خان بُری طرح ناکام ہو گئے۔

خرم علی خان کی ناکامی کی وجہ پارٹی کے اندرونی اختلافات اور اس حلقے سے عام انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے والے پی ٹی آئی رہنما میجر ریٹائرڈ صادق کا ووٹرز کو مسلم لیگ ن کی حمایت کی ہدایت کرنا تھا ۔ اس معاملے کی اندرونی کہانی یہ ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے رہنما میجر ریٹائرڈ طاہر صادق نے ضمنی انتخاب کی لڑائی میں اپنی جماعت پاکستان تحریک انصاف کی بجائے مسلم لیگ ن کی حمایت کا اعلان کیا۔

(جاری ہے)

میجرریٹائرڈ طاہر صادق نے ضمنی انتخاب کے لیے مسلم لیگ ن کی حمایت کُھلے عام کی اور حلقے میں ن لیگ کے اُمیدوار ملک سہیل خان کے بینرز پر میجر ریٹائرڈ طاہر صادق کی تصویر کے ساتھ میجر گروہ بھی تحریر تھا۔ حلقے کی عوام میجر ریٹائرڈ طاہر صادق کی حمایتی تھی اور اسی وجہ سے میجر ریٹائرڈ طاہر صادق کے حمایتوں نے ان کی ہدایت پر عمل کیا اور ووٹ پی ٹی آئی کی بجائے مسلم لیگ ن کے اُمیدوار ملک سہیل خان کو دیا جس پر پی ٹی آئی کو شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل این اے 56 میں ٹکٹ کی تقسیم پر بھی میجر ریٹائرڈ طاہر صادق کے پارٹی سے اختلافات سامنے آئے تھے۔ عمران خان این اے 55 کی نشست سے امین اسلم کو الیکشن لڑوانے کے خواہشمند تھے لیکن میجر(ر) طاہر صادق نے قیادت کی مرضی کے خلاف یہ نشست اپنے پاس رکھی،میجر(ر)طاہر حلقہ این اے 56 سے ایک لاکھ 63 ہزار ووٹ لے کر کامیاب ہوئے تھے ۔ طاہر صادق نے اٹک ضلع سے 2 قومی اور ایک صوبائی نشست بھاری اکثریت سے جیتی تھیں۔

این اے 56 کی نشست چھوڑنے کے بعد میجر(ر) طاہر صادق این اے 56 سے اپنے داماد وسیم گلزار یا بیٹے زین الٰہی کو الیکشن لڑوانے کا ارادہ رکھتے تھے، لیکن پارٹی نے ٹکٹ خرم علی خان کو دے دیا ۔ پاکستان تحریک انصاف کے اندرونی ذرائع کا کہنا ہے کہ انتخاب سے قبل پارٹی کی جانب سے کروائے جانے والے سروے میں بھی یہ بات سامنے آئی تھی کہ حلقے کی 80 فیصد سے زائد عوام میجر (ر) طاہر صادق کے خاندان کے کسی فرد کو ہی ٹکٹ دینے کے حامی ہیں۔ ان کا خیال تھا کہ اگر کسی اور کو ٹکٹ دیا گیا تو پاکستان تحریک انصاف ہار سکتی ہے، لیکن پی ٹی آئی نے ان تمام باتوں کو نظر انداز کر کے ٹکٹ خرم علی خان کو دے دیا جس پر پی ٹی آئی کو این اے 56 سے بُری طرح ناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔