ریاست کیلئے لیاقت علی خان کے وضع کردہ تابناک راستے اور ان کے اختیار کردہ اصولوں کی سختی سے پیروی کرنے کی ضرورت ہے ،ْصدرمملکت

صدر مملکت نے قائد ملت لیاقت علی خان کے تصورات اور تعلیمات کے فروغ کے عزم کا اعادہ ،ْ برسی کے موقع پر ڈاکٹر عارف علوی کا پیغام

پیر اکتوبر 23:13

ریاست کیلئے لیاقت علی خان کے وضع کردہ تابناک راستے اور ان کے اختیار ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 اکتوبر2018ء) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ ہمیں پاکستان کی ریاست کیلئے لیاقت علی خان کے وضع کردہ تابناک راستے اور ان کے اختیار کردہ اصولوں کی سختی سے پیروی کرنے کی ضرورت ہے۔ قائد ملت لیاقت علی خان کی 67ویں برسی کے موقع پر اپنے پیغام میں صدر مملکت نے قائد ملت لیاقت علی خان کے تصورات اور تعلیمات کے فروغ کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ لیاقت علی خان پاکستان کے بانیان میں سے ایک تھے جنہوں نے بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناحؒ کے ساتھ مل کر برصغیر کے مسلمانوں کیلئے الگ وطن کے حصول کیلئے دلجمعی کے ساتھ جدوجہد کی، ان کی خدمات تحریک آزادی کی تاریخ میں سنہری باب ہیں، پاکستان کے پہلے وزیراعظم اور قائداعظم کے انتہائی بااعتماد رفیق کار کی حیثیت سے انہوں نے نئی ریاست بالخصوص مہاجرین کی بحالی کیلئے گرانقدر خدمات انجام دیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے ایسے نازک وقت میں حکومت سنبھالی جب کئی اندرونی اور بیرونی چیلنجز درپیش تھے تاہم انہوں نے یہ ذمہ داری بخوبی انجام دی۔ وہ جمہوری اقدار کے بھرپور حامی اور پیروکار تھے اور انہوں نے جمہوری اداروں کی بنیاد رکھنے کیلئے سخت محنت کی اور ان کی ترقی کیلئے بھی راہ ہموار کی۔ صدر نے کہا کہ 16 اکتوبر 1951ء کو ایک المناک واقعہ میں قوم ایک عظیم رہنما سے محروم ہو گئی تاہم پاکستان کی تشکیل سے قبل اور بعد ازاں ان کی خدمات ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔