سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے الیکشن 2018ء میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کے لئے سینٹ اور قومی اسمبلی کے اراکین پر مشتمل 30 رکنی کمیٹی کا اعلان کر دیا

پیر اکتوبر 23:33

سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے الیکشن 2018ء میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 اکتوبر2018ء) سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے الیکشن 2018ء میں مبینہ دھاندلی کی تحقیقات کے لئے سینٹ اور قومی اسمبلی کے اراکین پر مشتمل 30 رکنی کمیٹی کا اعلان کر دیا ہے۔ کمیٹی الیکشن 2018ء میں دھاندلی کی تحقیقات کے لئے ٹرم آف ریفرنس (ٹی او آر) کو حتمی شکل دے گی اور اس کے مطابق ضروری اقدامات اٹھانے سمیت ارکان کمیٹی کے اتفاق رائے سے طے پانے والے مقررہ وقت کے اندر رپورٹ مرتب کر کے ایوان میں پیش کی جائے گی۔

پیر کو قائمقام سیکرٹری قومی اسمبلی قمر سہیل لودھی کے دستخطوں سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق کمیٹی میں وزیر دفاع پرویز خٹک، وفاقی وزیر شفقت محمود، وفاقی وزیر ڈاکٹر شیریں مزاری، وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات چوہدری فواد حسین، وفاقی وزیر چوہدری طارق بشیر چیمہ، وفاقی وزیر اعظم خان سواتی، ارکان قومی اسمبلی محمد عامر ڈوگر، خالد حسین مگسی، اختر مینگل، سید امین الحق، غوث بخش خان مہر، سردار ایاز صادق، رانا تنویر حسین، احسن اقبال، مرتضیٰ جاوید عباسی، رانا ثناء اللہ، راجہ پرویز اشرف، سید خورشید احمد شاہ، سید نوید قمر، امیر حیدر اعظم خان، عبدالواسع، سینیٹر محمد علی خان سیف، سینیٹر سرفراز بگٹی، سینیٹر نعمان وزیر خٹک، سینیٹر ہدایت اللہ، سینیٹر محمد جاوید عباسی، سینیٹر محمد اسد علی خان جونیجو، سینیٹر محمد عثمان کاکڑ، سینیٹر عبدالرحمن ملک اور سینیٹر مولانا عبدالغفور حیدری شامل ہیں۔

(جاری ہے)

نوٹیفکیشن کے مطابق کمیٹی کا قیام 18 ستمبر اور 3 اکتوبر 2018ء کو قومی اسمبلی اور 5 اکتوبر کو ایوان بالا میں کمیٹی کے قیام کے لئے پیش کی گئی تحاریک کی روشنی میں سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے چیئرمین سینٹ، قائد ایوان اور قائد حزب اختلاف کی مشاورت کے بعد پارلیمانی کمیٹی کا اعلان کیا ہے۔ کمیٹی الیکشن 2018ء میں دھاندلی کے الزامات کا جائزہ لے گی اور اپنے ٹی او آر خود تیار کرے گی۔ کمیٹی میں کسی بھی ردوبدل کا اختیار سپیکر قومی اسمبلی کو حاصل ہو گا۔