آئی ایم ایف کا توانائی اصلاحات پر عدم اعتماد کا اظہار

آئی ایم وفد پاورسیکٹر کی کارکردگی میں مزید بہتر ی پر زور، بجلی پر سبسڈی ختم کرنے کی ہدایت

جمعرات نومبر 23:21

آئی ایم ایف کا  توانائی اصلاحات پر عدم اعتماد کا اظہار
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 نومبر2018ء) آئی ایم ایف وفد نے توانائی اصلاحات پر عدم اعتماد کا اظہار کردیا آئی ایم وفد پاورسیکٹر کی کارکردگی کو مزید بہتر کرنے پر زور دیتے ہوئے بجلی پر سبسڈی ختم کرنے کی ہدایت کردی پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان جمعرات کو بھی مذاکرات جاری رہے ۔آ ئی ایم ایف وفد اور پاور ڈویڑن حکام کے درمیان مذکرات کا پہلا مرحلہ ہوا آئی ایم وفد کا کہن اتھا کہ پاکستان سے 14 نکاتی اصلاحاتی پروگرام پر اتفاق ہوا تھاگزشتہ حکومت نے 14 نکاتی اصلاحاتی پروگرام پر عمل در آمد نہ کیا گیا ہے جس پر آئی ایم ایف وفد کی جانب سے اصلاحات پر نیا ایجنڈا پیش کیا گیا ہے۔

آئی ایم ایف وفد نے بجلی کے بلوں کی مکمل وصولی کرنح کی ہدایت کی ہے حبکہ حکومت کو بجلی کے نقصانات کم کرنے کیلیے اقدامات کرنے کی بھی ہدایت کی ہے۔

(جاری ہے)

ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی ایف وفد نے بجلی تقسیم میں اصلاحات کرکے سبسڈی کو ختم کرنے کی تجاویز بھی دی ہیں۔ وزارت توانائی حکام کی جانب سے وفد کوٹیرف، ریکوری اور لاسز پر بریفنگ دی گئی ہے جبکہ بریفنگ میں پاور سیکٹر کے گردشی قرضوں کی تفصیلات پیش کی گئیں ہیں۔

ذرائع پاور ڈویڑن کے مطابق حکام نے وفد کو بتایا کہ پاکستان کو بجلی چوری جیسے مسائل کا سامنا ہیبجلی چوری کی روک تھام کے لیے صوبائی اور مرکزی سطح پر ٹاسک فورس قائم کر دی ہے بجلی صارفین کے لیے سبسڈی کو بھی کم کر دیا گیا ہے۔ حکام پاور ڈویڑن نے آئی ایم وفد کو بتایا کہ پاور سیکٹر پر سبسڈی کو کم کرنے سے ریکوری کا نظام بہتر اور خزانے پر بوجھ کم پڑے گا۔

۔۔شاہد عباس P$زeخ*`mزe&$زeخ*`m زeخ*`m`m`m`m`m7`m`mن*`m`m`m`m`mV`m`m`m7`m`mA`m۔ 0(؁=(*0=Po0`m`mظہ*=(*0 p@O~0ع&مKظہ*Nast*0)+…ا*ت*0ن*مKظہ*M=(*0ع&مKظہ*ین*=(*0مKظہ*@HOU=(*0٪ؤ~ظہ*~مKU ~@d Ir* Kr؂O LP(؁ ںل ز= (؁ز= G`mچ*Rظہ*FGppئؤپ@ئؤص]A ص])x F)x۔ ع&.}ظہ*=Pظہ*Kین*j`mظہ*ی[ف*[J؂ ․J؂ ظہ*ٹ ین*L`mظہ*ک- ظہ*ین*.`mظہ*ٹ*ظہ*ش*ین*L`mظہ*ف+ w ظہ*ٴْین*`mظہ*ٖٴْ4-ّ@ظ*ٹ*bّٖ@:( ^b:( Pٹ*^P(ھ ھ ٹ* ظہ* ین*L`mظہ* r-×xطة=(ٹ*×xظہ*ین*j`mظہ*ٹ*Xu ا!VXu ح_ *‘ ٹ*Vح_ طہ*-+ین*L`mظہ**+bٴ)ٹ**)ظہ*ین*L`mظہ*tز ) ،) ظہ*rین*j`mظہ*ی[ف*[J؂ ․J؂ ظہ*ٹ ین*L`mظہ*ک- ظہ*sین*L`mظہ*rsrھ ×؂ r×؂ ظہ* ین*L`mظہ*+د/ٹ*د/ظہ*ین*L`mظہ*tز ) ،) ظہ*rں*ین*L`mظہ*ن*ں*|۶ ظ؂… ٹ*ن*ظہ*ظ‘۔

ین*j`mظہ*ی[ف*[J؂ ․J؂ ظہ*ٹ ین*L`mظہ*ک- ظہ*ین*.`mظہ*ٹ*ظہ*ش*ین*L`mظہ*ف+ w ظہ*ٴْین*`mظہ*ٖٴْ4-ّ@ا*ٹ*bّٖ@:( ^b:( Pٹ*^P(ھ ھ ٹ* ظہ* ین*L`mظہ* r-×xٹ*×xظہ*ین*j`mظہ*ٹ*Xu ا!VXu ح_ *‘ ٹ*Vح_ طہ*-+ین*L`mظہ**+bٴ)PPE0ٹ**)ظہ*ین*L`mظہ*tز ) ،) ظہ*rین*.`mظہ*ٹ*ظہ*۳_ین*ہ*`mظہ*ٹ*آ*6خ*آ*6خ*گzٹ*rگz:نpr:ش*ٹ*pش*طہ*ین*.`mظہ*ٹ*ظہ*Kین*j`mظہ*ٹ*J BHJ *‘ ٹ*Hطہ*"9ین*(`mظہ*ٹ*ظ*9dف*ط*ظ*dف*،ْ&ٹ*ب*ط*،ْ&[و*Iا*ب*[و*ٌٴٹ*cا*ٌٴ6/Ibc6/زLٹ*bزLصہ* ین*j`mظہ*ٹ*ق*ک~5ف*ق*ک~ٌٹ*ف*ٌطہ*،Uین*`mظہ*۷ "ٹ*؛"ُ:؛ُ&ٹ*Y:&ہہ WYہہ ۹ٹ*UW۹۹TU۹3<ٹ*T3<ظہ*ین*j`mظہ*ٹ*o`H!no`~ٹ*n~طہ*ن*ع&.}ظہ*ٹ*+ظہ*7ظ*۔ع&j}ظہ*ٹ*u۔ ،Btu ں`ٹ*tں`طہ*ض4ع&j}ظہ*ٹ*/․ک*./․ز<ٹ*.ز<ظہ*ؒ؂ع&.}ظہ*ٹ*؂ظہ*&]ؓع&(}ظہ*ٹ*ِؓخ= J-ِخ=ٹ*-ٴ% }ٴiIل*ٹ*A}iI*P@A*P،ْqٹ*@،ْqضہ*& ہ*}ظہ*ٹ*ط*%+ِbض*ط*%+^ٹ*7ض*^۔XU47۔X<'،ٹ*4<'ضہ*9R-ع&چ*}ظہ*ٹ*o-*ز*Jno*ز*،ْٴْٹ*n،ْٴْخش