ملکی سیاست یہ ہے بولوگے توکیس بنے گا،شاہد خاقان عباسی

نیب کا کالا قانون ختم ہونا چاہیے، نیب نے میڈیا ٹرائل کرنا توہمیں بھی سامنے بٹھا لے، چیئرمین نیب رابطہ کرلیں میگاکرپشن کے2 کیسز ان کے حوالے کروں گا، ڈی جی نیب اپنی ڈگری پریس کے حوالے کریں تاکہ تصدیق ہوسکے،احتساب سے نہیں گھبراتے،ترازوایک ہونا چاہیے۔سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی پریس کانفرنس

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ جمعہ نومبر 15:48

ملکی سیاست یہ ہے بولوگے توکیس بنے گا،شاہد خاقان عباسی
اسلام آباد(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔09 نومبر 2018ء) مسلم لیگ ن کے مرکزی رہنماء اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ آج ملکی سیاست یہ ہے بولوگے توکیس بنے گا، نیب کا کالا قانون ختم ہونا چاہیے، نیب نے میڈیا ٹرائل کرنا توہمیں بھی سامنے بٹھا لے، چیئرمین نیب رابطہ کرلیں تومیں میگاکرپشن کے 2 کیسز ان کے حوالے کروں گا،ڈی جی نیب اپنی ڈگری پریس کے حوالے کریں تاکہ تصدیق ہوسکے،احتساب سے نہیں گھبراتے،ترازوایک ہونا چاہیے۔

انہوں نے آج یہاں مریم اورنگزیب اور رانا تنویر کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ نیب کالا قانون ہے ، آمر نے بنایا تھا، نیب کے کالے قانون کوختم ہونا چاہیے۔تمام سیاسی جماعتوں کو ملکر نیب کے کالے قانون کو ختم کرنا ہوگا۔ سیاست کو کنٹرول کرنے کیلئے نیب کو استعمال کیا جارہا ہے۔

(جاری ہے)

ملکی سیاست یہ ہے اگر بولو گے توکیس بنے گا۔نیب اپوزیشن کیخلاف نام نہاد کیس بنا رہا ہے۔

عدالت کا حکم ہے کہ کسی کی پگڑی نہ اچھالی جائے، لیکن نیب آج لوگوں کی پگڑیاں اچھال رہا ہے۔چیف جسٹس کا حکم موجو د ہے کہ زیرسماعت کیسز پر بات نہ کی جائے لیکن ایک سرکاری افسر جوحکومت سے تنخواہ لیتا ہے وہ آتا ہے اور بے بنیاد میڈیا ٹرائل شروع کردیتا ہے۔انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیب رابطہ کرلیں تومیں 2کیسز ان کے حوالے کروں گا۔ایک 750ملین کا کیس ہے ، دوسرا12ارب ڈالر کے نقصان کا رکوڈیک کیس ہے۔

میری کابینہ سے احتساب کا عمل شروع کریں۔ہم چاہتے ہیں نیب مسلم لیگ ن سے شروع کیا جائے۔لیکن جس ترازو سے ن لیگ، نوازشریف اور شہبازشریف کو تولا جارہا ہے اسی ترازو کے ساتھ باقی کوبھی تولا جائے۔سابق وزیراعظم شاہد خاقان نے کہا کہ بدقسمتی یہ ہے کہ ڈی جی نیب نے اپنے انٹرویو میں جوکچھ کہا اس میں کوئی حقیقت نہیں ہے۔ڈی جی شہزادسلیم اگر میرے پاس آجائیں میں ان کوساری حقیقت بتادوں گا۔

ڈی جی نیب نے اگر میڈیا ٹرائل کرنا ہے توہمیں بھی سامنے بٹھا لیں اور ہم ان کو جوابات دینے کیلئے تیار ہیں۔ہم گھبراتے نہیں ہیں۔موجودہ حکومت وہ کام کررہی ہے جو آمرانہ حکومت میں بھی نہیں ہوئے۔سعد رفیق نے ٹیکس سے متعلق تمام تفصیلات جمع کروائی ہیں لیکن سعد رفیق کیخلاف بلاجواز کیس بنایا جارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ آشیانہ کمپنی کا ٹھیکہ ایسی کمپنی کو دیا گیا جوسڑکیں بناتی ہے یہ کمپنی بلیک لسٹڈ ہے۔

شہبازشریف پر الزام یہ ہے کہ اس نے ایک بلیک لسٹڈ کمپنی کا ٹھیکہ منسوخ کردیا۔لیکن موجودہ حکومت نے اسی بلیک لسٹڈ کمپنی کو پشاور میں بی آرٹی کا ٹھیکہ دے دیا گیا ہے۔شہبازشریف کے داماد عمران کیخلاف کیسز بنائے گئے۔انہوں نے کہا کہ ڈی جی نیب کی ڈگری بارے عوام کو آگاہ کیا جائے۔ ڈی جی نیب اپنی ڈگری پریس کے حوالے کردیں۔ان کی ڈگری کی انکوائری کی جائے کہ ڈگری ٹھیک ہے یا جعلی ہے۔