شیری رحمن کا آئی ایم ایف سے مذاکرات پر ایوان کو اعتماد میں لینے کا مطالبہ

حکومتی وزراء ٹاک شو زمیں اقتصادی حالات بتا رہے ہوتے ہیں لیکن سینیٹ میں کوئی جواب دینے کو تیار نہیں، پارلیمان میں حکومت کریں ٹی وی پر نہیں ،سینیٹ میں شیری رحمان کی حکومت پر سخت تنقید

جمعہ نومبر 18:21

شیری رحمن کا آئی ایم ایف سے مذاکرات پر ایوان کو اعتماد میں لینے کا ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 نومبر2018ء) آئی ایم ایف سے مذاکرات پر ایوان کو اعتماد میں لینے اور قرضوں میں شفافیت کا مطالبہ کرتے ہوئے نائب صدر پیپلز پارٹی سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ اطلاعات کے مطابق آئی ایم ایف کی ٹیم آئی ہے، بتایا جائے کہ آئی ایم ایف کی کیا شرائط ہیں، کیا حکومت آئی ایم ایف کی مزید شرائط منظور کر کہ ایک اور بم گرانے جا رہی ہی سینیٹ میں حکومت کو سخت تنقید کا نشانا بناتے ہوئے سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ حکومتی وزراء ٹاک شو زمیں اقتصادی حالات بتا رہے ہوتے ہیں لیکن سینیٹ میں کوئی جواب دینے کو تیار نہیں، آئی ایم ایف سے کن شرائط پر بات کی جا رہی ہے پارلیامان کو بتایا جائے۔

انہوں نے کہا کے مہنگائی میں خوفناک اضافہ ہو رہا ہے، گیس ، پیٹرول اور تیل کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا ہے ۔

(جاری ہے)

پاکستان کا سب سے بڑا مسعلہ معاشی بحران ہے، حکومت کو نوے دن ہونے والے ہیں کیا اقدامات لئے جا رہے۔ شیری رحمان نے کہا کے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کا نام تبدیل کرنے کی ایک بار پھر کوشش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اقتدار میں آنے سے قبل وعدے کئے گئے تھے، آج تو وزیراعظم وزیراعظم ہاوس اور صدر ایوان صدر میں رہ رہے ہیں، ہر ایک اپنی اپنی جگہ پر رہ رہے ہیں، دوسروں پر تنقید کی گئی، آپ کے اپنے نیب زدہ وزراء گھوم رہے ہیں۔