دکھی انسانیت سے محبت، صلہ رحمی و حسن سلوک انسانیت کی اعلیٰ اقدار اور دین اسلام کا بنیادی درس ہے، وزیر اعلیٰ پنجاب

دکھی انسانیت سے صلہ رحمی و حسن سلوک سے پیش آنا ہم سب کا مذہبی ، اخلاقی اور سماجی فریضہ ہے‘انسانیت کا تقاضا ہے کہ کسی لالچ اور مفاد کے بغیر بنی نوع انسان کے ساتھ محبت و شفقت سے پیش آیا جائے ‘صلہ رحمی سے زندگی میں آسانیاں پیدا ہوتی ہیں،خیر خواہی کا جذبہ رکھنے والے لوگوں کی وجہ سے معاشرہ قائم ہے‘عوامی بھلائی کے کاموں میں مصروف تمام انسانوں اور فلاحی تنظیموں کی کاوشیں لائق تحسین و قابل تقلیدہیں، وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کا خلق خداکے ساتھ صلہ رحمی و حسن سلوک کی ضرورت و اہمیت کے عالمی دن کے موقع پر پیغام

پیر نومبر 22:22

دکھی انسانیت سے محبت، صلہ رحمی و حسن سلوک انسانیت کی اعلیٰ اقدار اور ..
لاہور۔12 نومبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 نومبر2018ء) وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ دکھی انسانیت سے محبت، صلہ رحمی و حسن سلوک انسانیت کی اعلیٰ اقدار اور دین اسلام کا بنیادی درس ہے، دکھی انسانیت سے صلہ رحمی و حسن سلوک سے پیش آنا ہم سب کا مذہبی ، اخلاقی اور سماجی فریضہ ہے، صلہ رحمی اور حسن سلوک معاشرے میں محبت اور بھائی چارے کو فروغ دینے کا موثر ذریعہ ہے، وزیراعلیٰ نے خلق خداکے ساتھ صلہ رحمی و حسن سلوک کی ضرورت و اہمیت کے عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا کہ یہ دن منانے کا مقصد خلق خدا کی بھلائی کی سرگرمیوں کے بارے میں شعور کو عام کرنا ہے اور آج ہمیں ان لوگوں کو خراج تحسین پیش کرناہے جو اپنی ذات پر خلق خدا کو ترجیح دیتے ہیں، انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت صلہ رحمی کو فروغ دینے کیلئے اقدامات کر رہی ہے، غریب لوگوں کیلئے پناہ گاہ جیسے منصوبے بنانا اسی سلسلے کی کڑی ہے، غریب اور کمزور لوگوں کی مدد کرنا ہی صلہ رحمی ہے، بلاشبہ انسانیت کا تقاضا ہے کہ کسی لالچ اور مفاد کے بغیر بنی نوع انسان کے ساتھ محبت و شفقت سے پیش آیا جائے کیونکہ انسانوں سے محبت اور صلہ رحمی و حسن سلوک سے زندگی میں آسانیاں پیدا ہوتی ہیں اورآج معاشرہ دوسروں کی فلاح و خیر خواہی کا جذبہ رکھنے والے نیک سیرت لوگوں کی وجہ سے ہی قائم و دائم ہے، وزیر اعلیٰ نے کہا کہ میں ان تمام افراد کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں جو ہمہ وقت انسانی بھلائی کے عمل میں مصروف ہیں، عوامی بھلائی کے کاموں میں مصروف تمام انسانوں اور فلاحی تنظیموں کی کاوشیں لائق تحسین و قابل تقلیدہیں اور آج ہمیں شفقت، شائستگی اور کائنڈنیس کو اپنی زندگیوں کا مقصد بنانے کے عزم کا اعادہ کرنا ہے۔