وزیراعظم آزاد کشمیر کا حکومت پاکستان سے زلزلہ متاثرہ علاقوں کے 2272منصوبوں کی تکمیل کیلئی39ارب روپے فراہم کرنے کیلئے تحریر ی مطالبہ

منگل نومبر 14:30

مظفرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 نومبر2018ء) وزیراعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمدفاروق حیدر خان نے حکومت پاکستان سے زلزلہ متاثرہ علاقوں کے 2272منصوبوں کی تکمیل کیلئی39ارب روپے فراہم کرنے کیلئے تحریر ی مطالبہ کردیا ، وفاقی وزیراطلاعات چوہدری فوادحسین کی جانب سے زلزلہ متاثرہ علاقوں میں تعمیرنو پروگرام کی تکمیل کے اعلان کے بعد وزیراعظم آزادکشمیر راجہ محمدفاروق حیدر خان نے وزیراعظم پاکستان عمران خان کے نام اپنے مکتوب میں موقف اختیار کیا ہے کہ آزادکشمیر کے زلزلہ متاثرہ علاقوں میں تعمیرنو پروگرام تاحال ادھورا ہے ،تعلیمی اداروں کے تین لاکھ طلباء تیرہ سالوں سے شدید موسمی حالات میں کھلے آسمان تلے تعلیم حاصل کرنے پر مجبور ہیں ،آزادکشمیر کے زلزلہ متاثرہ علاقوں میں 1316تعلیمی اداروں سمیت 2272منصوبے تعمیر کرنا باقی ہیں جن کیلئے 39ارب روپے کی ضرورت ہے ۔

(جاری ہے)

حال ہی میں وفاق کی سطح پر ERRAکو NDMAمیں ضم کرنے کی جو تحریک وفاقی کابینہ میں پیش کی ،اُس میں وفاقی وزیراطلاعات ونشریات چوہدری فواد حسین کی جانب سے تعمیرنو پروگرام کی تکمیل کا کہا گیا مگر آزادکشمیر وخیبرپختونخواہ میں 4063بقیہ منصوبہ جات کی تکمیل ابھی باقی ہے جس کے لئے آزادکشمیر اورخیبرپختونخواہ کی حکومتوں کو وفاقی حکومت سے مزید 90ارب روپے درکار ہیں ۔

وزیراعظم آزادکشمیر راجہ فا روق حیدر خان نے ایرا ء کے نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ میں ادغام سے قبل آزادکشمیر کے تمام منصوبوں کی تکمیل کیلئے رقم کرنے مہیا کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ آٹھ اکتوبر 2005ء کے زلزلہ کی قدرتی آفت کے بعد ایرا ء کا ادارہ زلزلہ متاثرہ علاقوں کے تمام منصوبہ جات کی تکمیل کیلئے قائم کیاگیا تھا ، اورعالمی برادری کی جانب سے اس کمٹمنٹ کے ساتھ مالی امداد حاصل کی گئی تھی کہ زلزلہ متاثرہ اداروں میں دوبارہ تمام منصوبہ جات مکمل کرکے عوام کو اپنے پائوں پر کھڑا کریں گے ،اگر وفاقی حکومت نے منصوبوں کی تکمیل کئے بغیر ایراء کو ضم کیاتو یہ عالمی برادری کے ساتھ کئے گئے وعدوں سے انحراف کے علاوہ زلزلہ متاثرہ علاقوں کے عوام کے ساتھ بھی ناانصافی ہوگی ۔