کوئی قوم سائنس و ٹیکنالوجی اور تحقیق میں پیشرفت کے بغیر ترقی نہیں کرسکتی، جلد مختلف شہروں میں چھ سائنس پارک قائم کئے جائینگے ،اعظم خان سواتی

ْہمیں سائنس کے مثبت امیج کو اجاگر ،دنیا میں امن و امان کو فروغ دینا ہوگا، نوجوان نسل پر سرمایہ کاری کی جاتی آج پاکستان ترقی یافتہ ممالک کی صف میں کھڑا ہوتا،میرٹ حکومتی ترجیحات میں شامل ہے ،محروم ،پسماندہ طبقات کی بہتری پر توجہ مرکوز کرنا ،نوجوان خواتین کو قومی دھارے میں شامل کرنے کیلئے پالیسی مرتب کرنے کی ضرورت ہے، وفاقی وزیر کا تقریب سے خطاب

منگل نومبر 20:00

کوئی قوم سائنس و ٹیکنالوجی اور تحقیق میں پیشرفت کے بغیر ترقی نہیں کرسکتی، ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 نومبر2018ء) وفاقی وزیر سائنس و ٹیکنالوجی اعظم خان سواتی نے کہا کہ کوئی قوم سائنس و ٹیکنالوجی اور تحقیق میں پیشرفت کے بغیر ترقی نہیں کرسکتی، جلد ملک کے مختلف شہروں میں چھ سائنس پارک قائم کئے جائینگے، ہمیں سائنس کے مثبت امیج کو اجاگر ،دنیا میں امن و امان کو فروغ دینا ہوگا، نوجوان نسل پر سرمایہ کاری کی جاتی آج پاکستان ترقی یافتہ ممالک کی صف میں کھڑا ہوتا،میرٹ حکومتی ترجیحات میں شامل ہے ،تمام اداروں میں خالصتا میرٹ کی بنیاد پر تعیناتیاں یقینی بنائینگے،معاشرے کے محروم ،پسماندہ طبقات کی بہتری پر توجہ مرکوز کرنا ،نوجوان خواتین کو قومی دھارے میں شامل کرنے کیلئے پالیسی مرتب کرنے کی ضرورت ہے۔

وفاقی وزیر نے یہ بات منگل کو پاکستان سائنس فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام سائنس کے عالمی دن کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔

(جاری ہے)

تقریب میں وفاقی وزیر مہمان خصوصی جبکہ پاکستان میں یونیسکو کی ڈائریکٹر وائی بیک جنسن گیسٹ وآف آنر تھیں۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر اعظم خان سواتی نے کہا کہ اس سال ’سائنس ۔انسانی حق‘ کے موضوع پرسائنس کا عالمی دن منایا جا رہا ہے جو اس بات کا متقاضی ہے کہ سائنس کے فوائد عالمی سطح پر تمام انسانوں تک منتقل کئے جائیں اور تمام ملکوں میں پائیدار اقتصادی ترقی کیلئے سائنس و ٹیکنالوجی سے بھر استفادہ کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ معاشرے کی ترقی اور خدمت کیلئے ایڈوانسگ سائنس کے تصور اور اہمیت کو اجاگر کیا جائے۔ وفاقی وزیر نے پاکستانی سائنسدانوں ڈاکٹر عطاالرحمان، ڈاکٹر ثمر مبارک مند اور ڈاکٹر اشفاق کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ نہ صرف پاکستان بلکہ ترقی پذیر ممالک کیلئے انکی خدمات قابل تحسین ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمیں سائنس کے مثبت امیج کو اجاگر کرنااور تمام دنیا میں امن و امان کو فروغ دینا ہوگا، ماضی میں نوجوان نسل کو مکمل طور پر نظر انداز کر دیا گیا تھا لیکن موجودہ حکومت نے ان کی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے اور انہیںمواقع دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کوئی قوم سائنس و ٹیکنالوجی اور تحقیق میں پیشرفت کے بغیر ترقی نہیں کرسکتی،پاکستان میں اس وقت کوئی سائنس پارک نہیں جبکہ ایران اور کوریا بھی اس سلسلے میں ہم سے آگے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے کہا کہ بہت جلد پاکستان کے مختلف شہروں میں چھ سائنس پارک قائم کئے جائیں گے اور وزارت سائنس و ٹیکنالوجی کا بجٹ بڑھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان نسل کسی بھی قوم کی ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے، اگر ہم اس پر سرمایہ کاری کرتے تو آج پاکستان ترقی یافتہ ممالک کی صف میں کھڑا ہوتا۔

انہوں نے کہا کہ میرٹ موجودہ حکومت ترجیحات میں شامل ہے ،تمام اداروں میں خالصتا میرٹ کی بنیاد پر تعیناتیوں کو یقینی بنائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سائنس انوویشن میں ہم دیگر ملکوں سے بہت پیچھے رہ گئے ہیں، علم تحقیق کا نام ہے جو ہمارے پاس بہت کم ہے۔انہوں نے کہا کہ کرپشن ایک ناسور ہے اسے جڑ سے اکھاڑنا ہمارا منشور کا حصہ ہے،جو کرپٹ ہو اسے سزا ضرور ملنی چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ ہمیں چین کے تجربات سے استفادہ حاصل کرنے کی ضرورت ہے۔ پاکستان میں یونیسکو کی ڈائریکٹر وائی بیک جنسن نے کہا کہ حالیہ دہائی میں سائنس و ٹیکنالوجی کی بے مثال ترقی نے انسانی زندگیوں پر مثبت اثرات مرتب کئے ہیںپائیدار اقتصادی دترقی کے حصول میں سائنس کا اہم کردار ہے۔ انہوں نے کہا کہ سائنس انسانیت کی خدمت کیلئے ساز گار موحول فراہم کرتا ہے، ہمیں معاشرے کے محروم اور پسماندہ طبقات کی بہتری پر توجہ مرکوز کرنا جبکہ نوجوان خواتین کو قومی دھارے میں شامل کرنے کیلئے پالیسی مرتب کرنے کی ضرورت ہے۔