تمام گورنرز ایسے تمام قیدیوں کیلئے فنڈ قائم کریں جو مدت مکمل کرنے کے باوجود جرمانہ کی عدم ادائیگی کی وجہ سے جیلوں میں پڑے ہیں،

تمام قیدیوں کوپینے کیلئے صاف پانی کی فراہمی کی ذمہ داری اٹھانے اورجیلوں میں قیدیوں اورپولیس اہلکاروں میں ہیپاٹائٹس کی تشخیص کیلئے لیبارٹریاں قائم کی جائیں ،سندھ کی طرزپرپورے ملک میں سیٹزن پولیس لیژان کمیٹیوں کے قیام عمل میں لایا جائے صدرمملکت عارف علوی کی زیر صدارت گورنرز کانفرنس

منگل نومبر 20:37

تمام گورنرز  ایسے تمام قیدیوں کیلئے فنڈ قائم کریں جو مدت مکمل کرنے کے ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 نومبر2018ء) صدرمملکت عارف علوی نے ایسے قیدیوں ، جنہوں نے اپنی قید کی مدت مکمل کی ہے لیکن ایک لاکھ روپے سے کم جرمانہ کی عدم ادائیگی کی وجہ سے جیلوں میں پڑے ہوئے ہیں ، کیلئے تمام گورنروں کوفنڈ کے قیام کی ہدایت کی ہے۔صدرمملکت نے تمام گورنروں س اس ضمن میں ایسے تمام قیدیوں کا ڈیٹا اکھٹا حاصل کرنے کی ہدایت کی ہے تاکہ اس عمل کوموثراندازمیں شروع اورمکمل کیا جاسکے۔

صدرمملکت نے یہ بات منگل کو یہاں گورنرز کانفرنس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔اس موقع پر چاروں صوبائی گورنرز اورگورنرگلگت بلتستان بھی موجود تھے۔صدرممکت نے گورنرز کو جیلوں میں تمام قیدیوں کوپینے کیلئے صاف پانی کی فراہمی کی ذمہ داری اٹھانے اورجیلوں میں قیدیوں اورپولیس اہلکاروں میں ہیپاٹائٹس کی تشخیص کیلئے لیبارٹریوں کے قیام کی ہدایت بھی کی ۔

(جاری ہے)

صدر مملکت نے سندھ کی طرزپرپورے ملک میں سیٹزن پولیس لیژان کمیٹیوں کے قیام کی ضرورت پر زوردیا ۔ صدر مملکت نے گورنرز پرزوردیا کہ وہ پانی، بہبودآبادی، صحت ، اورابتدائی، ثانوی اوراعلیٰ تعلیم کے شعبوں سے وابستہ مسائل کے حل میں قائدانہ کردار اداکریں۔صدر نے کہاکہ تمام گورنرز کو اپنے متعلقہ صوبوں میں متعلقہ وزارتوں کے ساتھ مل کر وزیراعظم پاکستان کے کلین اینڈ گرین پاکستان پر عمل پیرا ہونے کیلئے اقدامات کرنا چاہئیے۔

اجلاس کے دوران گورنرخیبرپختونخوا نے ماحول کے تحفظ کیلئے زیتون کی کاشت کی تجویز پیش کی۔صدر مملکت نے ضرورت مندوں کو فوری انصاف کی فراہمی یقینی بنانے کیلئے عدلیہ کے ساتھ تعاون کے ضمن میں متعلقہ ہائیکورٹس کے چیف جسٹسز صاحبان سے قریبی روابط استوارکرنے کی ہدایت کی۔صدر مملکت نے تمام گورنروں کوہدایت کی کہ غلام اسحاق خان انسٹی ٹیوٹ آف انجنئیرنگ سائنسز اینڈ ٹیکنالوجی کے ساتھ الحاق کیلئے وہ اپنے اپنے صوبوں میں کم سے کم ایک یونیورسٹی کا تعین کرے۔

انہوں نے گورنرزکو چاروں صوبوں میں نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے کیمپسز کے قیام کیلئے اراضی کی فراہمی کی ہدایت بھی کی۔گورنرخیبرپختونخوانے کانفرنس کے شرکاء کوبتایا کہ فاٹا انضمام کے ضمن میں 95 فیصد کام مکمل ہوچکاہے اوربقیہ 5 فیصد کام بھی تیزی سے مکمل کیا جاررہاہے۔گلگت بلتستان کے گورنر نے صدرمملکت سے گلگت بلتستان میں خواتین کیلئے یونیورسٹی کے قیام میں تعاون کی استدعا کی جس پر صدرمملکت نے انہیں مکمل حمایت کا یقین دلایا۔صدرمملکت نے عوامی مسائل وشکایات کے حل کیلئے تمام گورنروں کو ہدایت کی کہ صوبائی محتسب کے دفاتر کو زیادہ موثرطریقے سے چلانے کو یقینی بنایا جائے۔