یونیورسٹیوںاور دیگر تعلیمی اداروں میں پائیدارتحقیقی سرگرمیوں پر مبنی تعلیمی نظام کو فروغ دیکر پاکستان کو ترقی یافتہ ممالک کے برابر لایاجاسکتاہے

پروفیسر ڈاکٹر امجدعلی آریان کاتربت یونیورسٹی کے گوادرکیمپس میں تقریب سے خطاب

بدھ نومبر 00:30

کوئٹہ۔13نومبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 نومبر2018ء) (گوادر)سندھ یونیورسٹی شعبہ تعلیم کے معروف محقق اور پروفیسر ڈاکٹر امجدعلی آریان نے کہا ہے کہ یونیورسٹیوںاور دیگر تعلیمی اداروں میں پائیدارتحقیقی سرگرمیوں پر مبنی تعلیمی نظام کو فروغ دیکر پاکستان کو ترقی یافتہ ممالک کے برابر لایاجاسکتاہے۔ یونیورسٹیوںاور دیگر تعلیمی اداروں میں تحقیقی سرگرمیوںکی جانب خاطرخواہ توجہ نہ دینے کیوجہ سے آج پاکستان کا تعلیمی نظام سنگین مسائل سے دوچارہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے تربت یونیورسٹی کے گوادرکیمپس میں پاکستان میں تعلیم وتحقیق کے شعبہ کو درپیش مسائل کے موضوع پر منعقدہ ایک لیکچر سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا۔لیکچرسیشن کا اہتمام گوادر کیمپس شعبہ تعلیم نے Office of Research Innovation & Commercialization (ORIC)کے تعاون سے کیاتھا جس میںتربت یونیورسٹی کے مین کیمپس تربت اور گوادر کیمپس کے فیکلٹی ممبران کے علاوہ ڈسٹرکٹ ایجوکیشن افسر(فیمیل)گوادر محترمہ بلقیس،تربت یونیورسٹی شعبہ تعلیم کے چیئرمین طارق درا،ضلع گوادر کے تعلیمی اداروں کے اساتذہ سمیت طلبہ و طالبات کی کثیر تعدادمیںشرکت کی۔

(جاری ہے)

پروفیسر ڈاکٹر امجدعلی آریان کا کہناتھاکہ پاکستان کو اقتصادی، سیاسی اور معاشرتی لحاظ سے ترقی یافتی اور خوشحال بنانے اور گلوبل چیلنجز کا مقابلہ کرنے کے لئے ایلیمنٹری اور اعلی تعلیمی شعبے میں جامع منصوبہ بندی کی ضرورت ہے۔اپنے استقبالیہ خطاب میں ڈپٹی کیمپس کوارڈینیٹر حفیظ مبارک نے لیکچرسیشن کے ریسورس پرسنپروفیسر ڈاکٹر امجدعلی آریان کا شکریہ اداکرتے ہوئے تعلیمی شعبے میں بہتری لانے کے لئے موثرمنصوبہ بندی کرنے اورتمام ملکی یونیورسٹیوں میں اس طرح کے سیشن کے انعقاد کی ضرورت و اہمیت زوردیا ۔

انہوں نے ڈائریکٹرگوادرکیمپس اعجاز احمد کی جانب سے سیشن میں شرکت کرنے پر معزز مہمانوں کا بھی شکریہ اداکیا۔ گوادر کیمپس شعبہ تعلیم کے انچارج شہناز نور اور فیکلٹی ممبر درجان گچکی نے بھی اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے لیکچرسیشن کو شرکاء کے مفیدقراردیا۔آخر میں تربت یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر عبدالرزاق صابر کی جانب سے فیکلٹی ممبر مختار بشیر اور سعدیہ نصیر نے ریسورس پرسن اور مہمانوں کو شیلڈ پیش کیا۔

متعلقہ عنوان :