غیر استعمال شدہ زمین پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت استعمال کی جائے گی،

ملک میں موجود تمام ریسٹ ہائوسز کے مفت استعمال کو ختم کر دیا جائے گا اور ان کو مناسب کمرشل بنیادوں پر استعمال کیلئے زیر غور لایا جائے گا وفاقی وزیر دفاع پرویز خٹک کا سرکاری املاک کے متبادل استعمال پر ورکنگ گروپ کے اجلاس سے خطاب

بدھ نومبر 23:20

غیر استعمال شدہ زمین پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت استعمال کی جائے ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 نومبر2018ء) وفاقی وزیر دفاع پرویز خٹک نے سرکاری املاک کے زیادہ سے زیادہ مناسب استعمال کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ غیر استعمال شدہ زمین پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت استعمال کی جائے گی۔ وہ بدھ کو یہاں سرکاری املاک کے متبادل استعمال پر ورکنگ گروپ کے اجلاس کی صدارت رہے تھے۔ وفاقی وزیر کو مختلف املاک اور ان کے متبادل استعمال اور حیثیت پر آگاہ کیا گیا۔

ورکنگ گروپ نے بڑے شہروں میں مختلف سرکاری املاک کی نشاندہی کی۔ وفاقی وزیر کو سرکاری املاک کے سروے اور مختلف پائلٹ منصوبوں پر بریفنگ دی گئی۔ وفاقی وزیر نے سرکاری املاک کے زیادہ سے زیادہ مناسب استعمال کی ضرورت پر زور دیا۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ غیر استعمال شدہ زمین پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت استعمال کی جائے گی اور یہ بھی ہدایت کی کہ صوبوں کو غیر آباد شدہ سرکاری زمینوں کی موجودہ اور مستقبل کیلئے استعمال کا پلان دیا جائے۔

(جاری ہے)

وفاقی وزیر نے کہا کہ ملک میں موجود تمام ریسٹ ہائوسز کے مفت استعمال کو ختم کر دیا جائے گا اور ان کو مناسب کمرشل بنیادوں پر استعمال کیلئے زیر غور لایا جائے گا۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کا وژن عام آدمی کو سستی رہائش گاہ فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر سرکاری زمینوں کو زیادہ سے زیادہ بہتر طریقہ سے استعمال کیا جائے تو ملک میں رہائش کے مسائل حل ہوں گے اور کاروباری سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا۔ اجلاس میں وفاقی سیکرٹری ہائوسنگ اور صوبائی حکومتوں کے نمائندوں نے شرکت کی۔