مقبوضہ کشمیر سے متعلق متنازعہ بیان، ٹویٹر صارفین نے شاہد آفریدی کو آڑے ہاتھوں لے لیا

شاہد آفریدی نے وکٹ سنبھالی نہیں جاتی تھی اور بیان صوبے سنبھالنے کا دے رہے ہیں

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین جمعرات نومبر 15:24

مقبوضہ کشمیر سے متعلق متنازعہ بیان، ٹویٹر صارفین نے شاہد آفریدی کو ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 15 نومبر 2018ء) : لندن میں برطانوی پارلیمنٹ میں طلبا سے خطاب کرتے ہوئے ایک سوال کے جواب میں شاہد آفریدی نے کہا کہ پاکستان کو کشمیر کی ضرورت نہیں ہے۔ پاکستان کشمیر کو حاصل کرنے کا خواہشمند نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان تو اپنے 4 صوبے نہیں سنبھال سکتا، تو پھر کشمیر کیسے سنبھالے گا۔ کشمیر نہ بھارت کو دو نہ ہی پاکستان کو دو، کشمیر کشمیریوں کو دے دو، کشمیریوں کو جینے دیا جائے۔

شاہد آفریدی نے کہا کہ کشمیریوں کو خود مختار علاقہ میں رہنے کا حق حاصل ہے۔ شاہد آفریدی کے اس بیان پر نئی بحث کا آغاز ہو گی اور ٹویٹر پر کئی صارفین نے انہیں آڑے ہاتھوں لے لیا۔ ایک صارف نے لکھا کہ شاہد آفریدی بھائی مجھے آپ اس ویڈیو کی وضاحت سمجھا دیں؟ یہ تو ہم لوگوں کی ہی غلطی ہے کہ آپ جیسے کو اپنا قومی ہیرو بنادیا۔

(جاری ہے)

ہمیں تو اس وقت آپ کا بائیکاٹ کر دینا چاہئیے تھا جب آپ نے کہا تھا کہ پاکستان سے زیادہ مجھے انڈیا سے پیار ملتا ہے۔

ایک اور صارف نے شاہد آفریدی کے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ شاہد آفریدی سے اپنے کیرئیر میں اپنی وکٹ سنبھالی نہیں گئی اور بیان صوبے نہ سنبھالے جانے کے دے رہا ہے ۔ صارف نے لکھا کہ شاہد آفریدی کو یہ تک معلوم نہیں ہے کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے۔
ٹویٹر صارف نے لکھا کہ معذرت کے ساتھ شاہد آفریدی سے وکٹ پر تو اپنے آ پ کو دس منٹ نہیں سنبھالا جاتا تھا۔

اور آ ج انڈیا بیٹھ کر پاکستان سے چار صوبے نہیں سنبھل رہے اس کا تذکرہ کر رہے ہیں۔ شاہد صاحب پاکستان نے آپ کو سٹار بنایا ہے۔ کچھ تو خیال کریں۔
ایک اورصارف نے لکھا کہ قائداعظم نے فرمایا تھا کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے کرکٹر تھا تب بھی چھنکنا بجاتا تھا ریٹائرڈ ہو کر بھی چھنکنا بجا رہا ہے۔
کچھ صارفین نے شاہد آفریدی کے کرکٹ کیرئیر پر بھی تنقید کی اور کہا کہ شاہد آفریدی نے پہلے پشاور زلمی چھوڑی,پھر کراچی کنگز گیا، اب وہ چھوڑ دی اب لگتا ہے لاہور قلندرز میں آرہاہے۔

لاہور قلندرز میں نہ آنا کوئی فائدہ نہیں انہیں جیتنے کی بھی ویسےبھی کوئی چاہ نہیں ہے۔ ادھر آ کر جوتھوڑی بہت عزت ہے وہ بھی گنوا دے گا۔
ایک اور صارف نے کہا کہ مجھے حیرت شاہد آفریدی پر نہیں اُن لوگوں پر ہے جو اُس سے کسی ڈھنگ کی بات کی توقع رکھتے ہیں۔
ایک خاتون صارف نے کہا کہ شاہد آفریدی کبھی میرا آٸیڈیل ہوا کرتا تھا، جب میں چھوٹی اور نادان ہوا کرتی تھی۔

ایک صارف نے تو حد ہی کر دی اور کہا کہ سنا ہے کبھی شاہد آفریدی چھکے چوکے بھی مارا کرتا تھا آج کل تو صرف چولیں ہی مارتا ہے۔
ایک اور صارف نے کہا کہ بندر کے ہاتھ میں اُسترا اور شاہد آفریدی کے ہاتھ میں مائیک ایک ہی بات ہے۔
ایک اور ٹویٹر صارف نے لکھا کہ شاہد آفریدی کے بیان پر برا بلکل نہیں مانا جائے بلکہ اسے اسکی درست اوقات یا کرائی جائے یہ صرف برانڈ کے چکر میں انڈیا کے خلاف بولتے گھبراتا ہے۔

ایک خاتون نیوز اینکر نے شاہد آفریدی کے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ شاہد آفریدی کا بیان انتہائی بھونڈا اور سخت قابل مذمت ہےان کوسمجھ ہونی چاہئیے کہ پاکستان بنانےوالے قائد نے بھی کہا تھاکہ کشمیرپاکستان کی شہ رگ ہے۔کشمیریوں کےدل ہروقت پاکستان کے لیے دھڑکتے ہیں۔ وہ پاکستان ہی کے لیے دن رات قربانیاں دے رہے ہیں۔ بھارتی ظلم وبربریت سےجگر گوشے شہید ہو رہے ہیں ۔
شاہد آفریدی کے اس متنازعہ بیان نے سوشل میڈیا پر موجود ناقدین کی توپوں کا رُخ ان کی جانب موڑ دیا ہے۔