وزیراعظم عمران خان کی نا اہلی کی درخواست سماعت کے لیے مقرر

جسٹس شمس محمود مرزا جمعہ کے روز عمران خان کی نا اہلی کی درخواست پر سماعت کریں گے

Muqadas Farooq مقدس فاروق اعوان جمعرات نومبر 16:53

وزیراعظم عمران خان کی نا اہلی کی درخواست سماعت کے لیے مقرر
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔15 نومبر2018) عمرانعمران خان کو نواز دور میں لوگوں کو سول نا فرمانی پر اکسانا مہنگا پڑ گیا ۔وزیراعظم عمران خان کی نا اہلی کے لیے لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کی گئی تھی جسے سماعت کے لیے مقرر کر لیا گیا۔میڈیا رپورٹس کے مطابق لاہور ہائیکورٹ نے وزیراعظم عمران خان کی نا اہلی کی درخواست سماعت کے لیے مقرر کر لی ہے۔

جسٹس شمس محمود مرزا عمران خان کی نا اہلی کی درخواست پر سماعت کریں گے ۔درخواست پر سماعت جمعہ کے روز ہو گی۔ لاہورہائیکورٹ میں لائیرز فاؤنڈیشن فار جسٹس نے وزیراعظم عمران خان کی نا اہلی کے لیے درخواست دائر کی تھی۔درخواست میں وفاقی حکومت اور وزیر اعظم عمران خان نیازی کو فریق بنایا گیا تھا۔درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ عمران خان نے ملکی سالمیت کے خلاد اقدامات کیے ہیں۔

(جاری ہے)

نواز شریف کے دور حکومت میں عمران خان نے سول نا فرمانی کے لیے لوگوں کو اکسایا ہے۔عمران خان نے لوگ کو اکسایا کہ وہ ٹیکس نہ دیں اور بیرون ملک سے رقوم بھی نہ بھیجیں جب کہ عمران خان نے حامیوں سمیت پارلیمنٹ کی پلدنگ پر دھاوا بولا اور گیٹ توڑا۔ درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت وزیراعظم عمران خان کو آرٹیکل 62 ون جی کے تحت نا اہل اور 124اے کے تحت کاروائی کا حکم دے۔

واضح رہے عمران خان نے اسلام آباد میں آزدی مارچ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے حکومت کے خلاف سول نا فرمانی کی تحریک کا اعلان کرتے ہوئے ٹیکس اور بجلی کا بل نہ دینے کا اعلان کیا تھا جس کی سیاسی حلقوں نے شدید الفاظ میں مذمت کی تھی۔سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ سول نافرمانی کی تحریک کا اعلان عوام اور جمہوریت کی خدمت نہیں ہے۔آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ ملکی سیاسی صورت حال تشویشناک ہے، سیاسی مقاصد غیر آئینی طریقے سے حل کرانا جمہوریت کے لئے تباہ کن ہے، موجودہ صورت میں فریقین کو صبرو تحمل سے کا مظاہرہ کرنا چاہیئے۔ ان کا کہنا تھا کہ فریقین کو محاذ آرائی کے بجائے مذاکرات شروع کرنے چاہیئیں تاکہ جلد از جلد دوبارہ سے معمول پر آ سکیں