میئر کراچی شہر کی قانونی مارکیٹوں کو تباہ کر رہے ہیں، خرم شیر زمان

گارڈن مارکیٹ، لائٹ ہائوس، جامع کلاتھ ،آرام باغ، فرئیر مارکیٹ اور لی مارکیٹ قانونی مارکیٹس ہیں،لوگوں کو بے روزگار کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے

جمعہ نومبر 22:37

میئر کراچی شہر کی قانونی مارکیٹوں کو تباہ کر رہے ہیں، خرم شیر زمان
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 نومبر2018ء) پاکستان تحریک انصاف کراچی ڈویژن کے صدر و رکن سندھ اسمبلی خرم شیر زمان نے کہا ہے کہ چیف جسٹس نے شہر کراچی میں غیر قانونی قبضے ختم کرنے کے احکامات دئیے تھے۔ اس میں یہ بات شامل تھی کہ فٹ پاتھ، سڑکیں، پارکس پر قبضے ختم کرائے جائیں اور غیر قانونی شادی ہال یا سرکاری زمینیں خالی کروائی جائیں۔ پاکستا ن تحریک انصاف چیف جسٹس کے احکامات کے ساتھ ہے۔

ہم بھی چاہتے ہیںجہاں جہاں قبضے ہیں، ختم کیے جائیں۔ یہ باتیں انہوں نے سندھ اسمبلی میں تقریر کرتے ہوئے کہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ میئر کراچی شہر کی قانونی مارکیٹوں کو تباہ کر رہے ہیں۔گارڈن مارکیٹ، لائٹ ہائوس، جامع کلاتھ ،آرام باغ، فرئیر مارکیٹ اور لی مارکیٹ قانونی مارکیٹیں ہیں۔

(جاری ہے)

لوگوں کو نوٹس دے کر نکالا نہ جائے۔ اگر آپ کو کرائے بڑھانے ہیں تو بے شک بڑھا دیں لیکن سالہا سال سے کاروبار کرنے والوں کے کاروبار تباہ نہ کیے جائیں۔

خرم شیر زمان نے کہا کہ تحریک انصاف چاہتی ہے کہ لوگوں کو بے روزگار نہ کیا جائے۔ صدر میں سب فٹ پاتھوں پر پتھارے لگے ہیں۔ ہر سڑک پر قبضے موجود ہیں۔ ایسے پارکس ہیں جن پر قبضے ہیں۔ لوگوں کو بے روزگار کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے۔ عوام الناس کے کاروبار تباہ نہ کیے جائیں۔ اس کے خلاف تحریک انصاف ہر فورم پر آواز بلند کر رہی ہے کہ خدارا چیف جسٹس کو یہ بتایا جائے کہ آپ کے احکامات کی آڑ میں لوگوں کو نقصان پہنچا یا جارہا ہے ۔

دنیا بھر میں نیون بورڈز استعمال کیے جاتے ہیں۔ اگر کوئی چھجا باہر نکلا ہے تو ضرور توڑیں۔ شاول کے ذریعے امتیاز سپر مارکیٹ کے فرنٹ پر لگے ہوئے شیشے توڑدئیے گئے۔ یہ ظلم میرے حلقے سے شروع ہو کر آگے جا رہا ہے۔ یہ کوئی ناجائز تجاوزات نہیں ہیں۔ کمشنر کراچی کے پاس ا س کاکوئی جواب نہیں تھا۔ میئر کراچی نے کہا کہ غلطی ہوئی ، معذرت خواہ ہیں۔ لاکھوں روپے کے سائن بورڈز توڑے گئے۔ اس پر صرف معذرت سے کام چلایا جارہا ہے۔ تحریک انصاف کا یہ سوال ہے کہ اگر کسی محکمے سے کوئی غلطی ہو رہی ہے تو اس کا جواب دہ کون ہے۔