منشیات کے استعمال کا بڑھتا رجحان معاشرے کی تباہی کا سبب ہے،شفقت محمود

بڑے بڑے آرٹسٹ اس نشے سے تباہ ہوئے ، نوجوان منشیات سے دور رہیں، یہی ہمارے حق میں بہتر ہے، وفاقی وزیر کا تقریب سے خطاب

جمعہ نومبر 23:15

منشیات کے استعمال کا بڑھتا رجحان معاشرے کی تباہی کا سبب ہے،شفقت محمود
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 نومبر2018ء) وفاقی وزیر تعلیم و پیشہ ورانہ تربیت شفقت محمود نے کہا ہے کہ منشیات کے استعمال کا بڑھتا رجحان معاشرے کی تباہی کا سبب ہے، بڑے بڑے آرٹسٹ اس نشے سے تباہ ہوئے ، نوجوان منشیات سے دور رہیں، یہی ہمارے حق میں بہتر ہے۔وفاقی وزیر نے یہ بات جمعہ کو نیشنل کونسل آف آرٹس میں پوسٹرز کی نمائش ’منشیات زندگی کو برباد کردیتی ہے ‘ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

وفاقی وزیر شفقت محمود نے کہا کہ اس نمائش کا موضوع انتہائی اہم ہے۔ انہوں نے کہا کہ منشیات کا بڑھتا ہوا رجحان معاشرے کی تباہی کا سبب ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اپنی زندگی میں بڑے بڑے آرٹسٹ کو منشیات کے نشے سے تباہ ہوتے ہوئے دیکھا ہے ۔ انہوں نے نوجوانوں کو اس نشے سے دور رہنے کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ جب بھی کوئی آپ کو منشیات کے نشے کی دعوت دے تو آپ اسے انکار کر دیں، کیونکہ یہی ہماری قوم اور آپ کے حق میں بہتر ہے۔

(جاری ہے)

وفاقی وزیر نے فن پاروں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ طلباء نے بڑے جاندار انداز میں موضوع کو اجاگر کیا ہے ۔ اس موقع پر نیشنل کالج آف آرٹس کے پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر مرتضیٰ جعفری نے کہا کہ نمائش میں پیش کئے جانیوالے پوسٹرز راولپنڈی اور لاہور کے نیشنل کالج آف آرٹس کے سیکنڈ اور تھرڈ ایئر کے طلباء نے بنائے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ نمائش منشیات کیخلاف ہماری مہم کا حصہ ہے جس میں طلباء کو پوسٹرز بنانے کے ذریعے شامل کیا گیا تاکہ ان میں منشیات کیخلاف شعور اجاگر ہو اور وہ اس سے کنارہ کش رہیں اور اپنے دوست احباب کو بھی اس سے دور رہنے کا مشورہ دیں۔

انہوں نے کہا کہ دس روز تک جاری رہنے والی اس نمائش میں اسلام آباد کے مختلف تعلیمی اداروں کے طلباء کو مدعو کیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان فن پاروں کو اسلام آباد کے مختلف سکولوں اور کالجوں میں بھی نمائش کیلئے پیش کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہم اسلام آباد کے این سی اے آڈیٹوریم میں ڈرامہ اور تھیٹر بھی شروع کرنے کے خواہشمند ہیں جس کیلئے ہمیں مزید کچھ جگہ کی ضرورت ہے جس کیلئے وزیر تعلیم سے درخواست کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت آڈیٹوریم میں صرف شارٹ کورسز کرائے جا رہے ہیں۔نیشنل کونسل آف آرٹس میں منعقدہ نمائش میں 50 سے زائد پوسٹرز پیش کئے گئے۔ تقریب کے اختتام پر وفاقی وزیر نے شارٹ کورسز کرنیوالے طلباء میں تعریفی سرٹیفکیٹس تقسیم کئے۔