پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر کا حجم کم ترین سطح پر پہنچ گیا

ذخائر 2 ماہ کی درآمدات کو بھی پورا نہیں کر سکتے، صرف آئی ایم ایف سے کامیاب مذاکرات ہی پاکستان کے لیے مسائل میں کمی کا باعث بنے گا، عالمی ریٹنگز ایجنسی موڈیز کی رپورٹ

muhammad ali محمد علی ہفتہ نومبر 22:17

پاکستان کے زرمبادلہ کے ذخائر کا حجم کم ترین سطح پر پہنچ گیا
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 نومبر2018ء) عالمی ریٹنگز ایجنسی موڈیز کا کہنا ہے کہ پاکستان کے زرمبادلہ ذخائرکا حجم کم ترین سطح پر ہے یہ ذخائر 2 ماہ کی درآمدات کو بھی پورا نہیں کر سکتے، آئی ایم ایف سے کامیاب مذاکرات پاکستان کے لیے مسائل میں کمی کا باعث بنے گا۔ تفصیلات کے مطابق عالمی ریٹنگز ایجنسی موڈیز نے پاکستان سے متعلق رپورٹ جاری کردی ہے جس میں زرمبادلہ ذخائر میں کمی پر اظہار تشویش کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ زرمبادلہ ذخائر کم ترین سطح پر ہیں اور یہ دو ماہ کی درآمدات کے لیے بھی کافی نہیں ہیں۔

موڈیز کا کہنا ہے کہ پاکستان، منگولیا، مالدیپ اور سری لنکا کو تقریبا ایک جیسے مسائل کا سامنا ہے۔ بیرونی خطرات انڈیکیٹر کا تناسب بڑھ کر 153 فیصد ہوگیا ہے۔

(جاری ہے)

رپورٹ میں آئی ایم ایف سے کامیاب مذاکرات کو پاکستان کے مسائل کا حل قرار دیتے ہوئے کہا کہ بیرونی مسائل سے نمٹنے کے لیے آئی ایم ایف سے کامیاب مذاکرات ضرورت ہیں۔ آئی ایم ایف پروگرام پاکستان کے مسائل میں کمی کا باعث بنے گا۔

عالمی ریٹنگز ایجنسی کے مطابق حال ہی میں پاکستان سعودی عرب سے ارب ڈالر کا پیکج حاصل کرنے میں کامیاب ہوا ہے۔ جاری کھاتے کے خسارے میں اضافہ بھی زرمبادلہ میں کمی کا باعث ہے۔ اعداد وشمار کے مطابق پاکستان کے بیرونی قرضوں کا حجم مجموعی قرضوں کا پینتیس فیصد ہے۔ گزشتہ ایک سال میں قرضوں میں 2 اعشاریہ 6 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ رواں مالی سال کی دوسری سہ ماہی میں بیرونی قرضوں کی شرح جی ڈی پی کا69.9 فیصد ہوگئی ہے۔