اعظم سواتی اورملازمین فارم ہاؤس پرجھگڑے کے ذمہ دارقرار

ڈی جی نیب عرفان منگی کی سربراہی میں قائم جے آئی ٹی نے واقعے کی تحقیقاتی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کروا دی ہے،اعظم سواتی کے خلاف تحقیقات کی رپورٹ 5 والیمز پر مشتمل ہے، ذرائع

sanaullah nagra ثنااللہ ناگرہ پیر نومبر 15:53

اعظم سواتی اورملازمین فارم ہاؤس پرجھگڑے کے ذمہ دارقرار
اسلام آباد(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔19 نومبر 2018ء) سپریم کورٹ کی جے آئی ٹی نے وفاقی وزیر اعظم سواتی اوران کے ملازمین کوفارم ہاؤس پرجھگڑے کا ذمہ دارقرار دے دیا۔ ڈی جی نیب عرفان منگی کی سربراہی میں قائم جے آئی ٹی نے واقعے کی تحقیقاتی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کروا دی ہے،اعظم سواتی کے خلاف تحقیقات کی رپورٹ 5 والیمز پر مشتمل ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اعظم سواتی کے فارم ہاؤس میں لڑائی کے جھگڑے اور پھر بلاوجہ آئی جی اسلام آباد کے تبادلے کی تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی نے اعظم سواتی اور ان کے ملازمین کو واقعے کا ذمہ دار قرار دے دیا ہے۔

اعظم سواتی کے خلاف تحقیقاتی رپورٹ 5 والیمز پر مشتمل ہے۔ ڈی جی نیب عرفان منگی کی سربراہی میں قائم جے آئی ٹی نے واقعے کی تحقیقاتی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کروائی۔

(جاری ہے)

رپورٹ جمع کروانے کیلئے جے آئی ٹی کے تمام ارکان ڈی جی نیب عرفان منگی کی سربراہی میں سپریم کورٹ پہنچے۔ واضح رہے اعظم سواتی کے صاحبزادے کی جانب سے ان کے فارم ہاؤس کے قریب رہائش پذیر غریب پرور خاندان کے خلاف اندراج مقدمہ کے بعد صورتحال خراب ہوئی۔

وفاقی وزیر نے معاملے پر آئی جی اسلام آباد کو کئی مرتبہ فون کرنے کا اعتراف کیا۔ یہ جھگڑا ابھی درمیان میں ہی تھا کہ آئی جی اسلام آباد جان محمد کو عہدے سے ہٹا دیا گیا جس پر چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے از خود نوٹس لیا تھا۔اعظم سواتی کے مس کنڈکٹ کے معاملے پر سپریم کورٹ نے جے آئی ٹی تشکیل دی تھی جس نے وفاقی وزیر کے پڑوسیوں ساتھ تنازع میں بطور وزیر ان کے مس کنڈکٹ کا تعین کرنا تھا، عدالت نے جے آئی ٹی کو 14 دن میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا تھا جبکہ اعظم سواتی اور ان کے بچوں کے اثاثے اور ٹیکس معاملات دیکھنے کی ہدایت بھی کی گئی تھی۔جے آئی ٹی نے اعظم سواتی کے علاوہ وزیر مملکت داخلہ کو بھی شامل تفتیش کیا تھا۔