صرف نام کا مسلمان تھا،والد کہنے پر جمعہ پڑھنے چلا جاتا ‘نبی کریم ﷺ کی سیرت مبارکہ پڑھنا شروع کی تو زندگی تبدیل ہوگئی. عمران خان

نبی ﷺ نے ہمیں یہ بتایا کہ فلاحی ریاست وسائل سے نہیں بلکہ احساس اور رحم کی وجہ سے بنتی ہے‘ یورنیوسٹیز اس بات پر ریسرچ کریں کہ نبی کریمﷺ نے کیسے انسانوں کو بدل دیا. وزیراعظم کا رحمت اللعالمین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کانفرنس سے خطاب

Mian Nadeem میاں محمد ندیم منگل نومبر 14:03

صرف نام کا مسلمان تھا،والد کہنے پر جمعہ پڑھنے چلا جاتا ‘نبی کریم ﷺ ..
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔20 نومبر۔2018ء) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ میں ایک نام کا مسلمان تھا،والد صاحب کے کہنے پر جمعہ پڑھنے چلا جاتا تھا،جب نبیﷺ کی زندگی پڑھنا شروع کی تو میری زندگی تبدیل ہونا شروع ہوئی. اسلام آباد میں دو روزہ رحمت اللعالمین صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ جب میں کرکٹ کھیل رہا تھا تو میاں بشیر نامی صوفی سے ملا، وہ بزرگ مجھے دین کی طرف لے آئے،انہوں نے میرے ایمان کے راستے کی رکاوٹ ختم کی.

انہوں نے مجھے کہا قرآن کی سمجھ ہی تب آئے گی جب ایمان دل میں آجائے گا.

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ جب اللہ کا یقین ہوجاتا ہے تو آپ کی زندگی تبدیل ہونا شروع ہوجاتی ہے،جس دن اللہ آپ کو راستہ دکھاتا ہے اس دن سیدھے راستے کی جدوجہد شروع ہوتی ہے،سیدھا راستہ پیارے نبی ﷺ کا راستہ ہے‘زندگی کے دو راستے ہیں ایک وہ جو انسان اپنے لیے گزارتا ہے،ایک وہ جب ذمہ دار انسان بنتے ہیں.

انہوں نے مزید کہا کہ اللہ کے نبی ﷺ نے ہمیں یہ بتایا کہ فلاحی ریاست وسائل سے نہیں بلکہ احساس اور رحم کی وجہ سے بنتی ہے،آخری نبی ﷺ کو اللہ نے رحمت اللعالمین کا خطاب دیا،اللہ کے آخری نبی ﷺ کی ساری زندگی تاریخ کا حصہ ہے. وزیر اعظم نے کہا کہ ہم ہائر ایجوکیشن کو کہہ رہے ہیں کہ تین یونیورسٹیز میں نبی آخرالزماںﷺ کی سیرت مبارکہ پر چیئر کریں،جنگ بدر کے11 سال بعد روم نے حضرت خالد بن ولید کے سامنے گھٹنے ٹیکے،آقاءکریم ﷺ دنیا کے وہ عظیم لیڈر تھے جنہوں نے 11 سال میں مسلمانوں کو سپر پاور بنادیا.

انہوں نے کہا کہ میں چاہتا ہوں یورنیوسٹیز اس بات پر ریسرچ کریں کہ نبی کریمﷺ نے کیسے انسانوں کو بدل دیا،ہمیں ہمارے بچوں کو بتانا چاہیے کہ کیسے آپ ﷺ نے عام سے انسانوں کو دنیا کا عظیم انسان بنادیا،آج تک کسی انسان نے ایسا نہیں کیا جو ہمارے نبی ﷺ نے کیا. وزیر اعظم نے ارادہ ظاہر کیا کہ ہم دنیا کے ممالک سے آزادی اظہار کے نام پر مسلمانوں کی دل آزاری کے خلاف کنونشن پر دستخط کرائیں گے،چاہتا ہوں 12 ربیع الاول پر ہمارا سالانہ کنونشن ہوا کرے اور اس کنونشن میں باہر سے بھی اسکالرز کو بلائیں،لوگوں کو بتائیں وہ کیا بات تھی کہ اللہ نے آپ ﷺ کورحمت اللعالمین کا خطاب دیا.